راولپنڈی چیمبر کا نجی شعبے  کے لیے مراعات کا مطالبہ

راولپنڈی چیمبر کا نجی شعبے  کے لیے مراعات کا مطالبہ

  



راولپنڈی (اے پی پی) راولپنڈی چیمبر آف کامرس کے صدر صبور ملک نے کہا ہے کہ علاقائی تجارت کو فروغ دے کر ملکی برآمدات میں اضافہ کیا جا سکتا ہے،سارک ممالک کے ساتھ ساتھ وسطی ایشیائی ریاستوں اور افغانستان کے ساتھ باہمی تجارت کے وسیع مواقع موجود ہیں، ازبکستان،  قزاقستان اور تاجکستان  میں پاکستانی مصنوعات کی زبر دست مانگ ہے، روایتی شعبوں کے ساتھ ساتھ نئے شعبوں میں بھی سرمایہ کاری  کی ضرورت ہے۔صبور ملک نے اے پی پی سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ  حکومت کوچاہیے کہ وہ وسطی ایشیائی ممالک کیساتھ فضائی رابطوں کے ساتھ ساتھ زمینی خاص طور پر ریلوے نیٹ ورک کو فروغ دے، بینکنگ چینلز بہتر کیے جائیں، کسٹم ٹیرف آسان کیا جائے تاکہ ایکسپورٹرز کو فائدہ ہو اور ملکی برآمدات میں اضافہ ہو۔انہوں نے کہاکہ  ان ممالک میں پاکستانی مصنوعات خاص طور پر ٹیکسٹائل، ملبوسات، لیدر، پھلوں آم، کینو اور چاول کی کافی مانگ ہے۔

صبور ملک نے کہا کہ چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبہ (سی پیک) پاکستان اور چین سمیت خطے کے ممالک کیلئے نفع بخش سرمایہ کاری کا نادر موقع ہے اور یہ منصوبہ علاقائی تجارت کے فروغ کے لیے نیٹ ورکنگ کا کردار ادا کرے گا گیم چینجر ہونے کے ساتھ ساتھ پاکستانی صنعتکاروں اور سرمایہ کاروں کے لئے معاشی ترقی کی نئی راہیں کھولے گا۔اس حوالے سے   تاجربرداری کا کردار بہت اہم ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت نجی شعبے کے لیے مراعات کا اعلان کرے تاکہ صنعتکارو تاجر علاقائی تجارت کے فروغ کے لیے ابھرتے ہوئے مواقع سے فائدہ اٹھاسکیں۔

مزید : کامرس