قانون کے علم میں خود کو پرفیکٹ سمجھنے والا جج یا وکیل بیوقوف ترین انسان:جسٹس امیر بھٹی

  قانون کے علم میں خود کو پرفیکٹ سمجھنے والا جج یا وکیل بیوقوف ترین ...

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس محمد امیر بھٹی نے کہاہے کہ قانون کے علم میں خود کو پرفیکٹ سمجھنے والا جج یا وکیل بیوقوف ترین انسان ہے، ہمیں اس وقت سے ڈرنا چاہیے جب ہم اپنے کئے گئے ایک ایک فیصلے کے لئے اللہ تبارک و تعالیٰ کے سامنے جوابدہ ہوں گے،وہ گزشتہ روز پنجاب جوڈیشل اکیڈمی میں جنرل ٹریننگ پروگرام کے تحت جاری پانچویں تربیتی کورس کی اختتامی تقریب سے خطاب کررہے تھے۔مسٹر جسٹس محمد امیر بھٹی نے مزید کہا کہ جوڈیشل افسروں کو اکیڈمی بلانے کا مقصد ججوں کو وہ چیزیں سکھانا ہوتا ہے جو انہوں نے پہلے نہیں سیکھی، پوری دنیا میں تیزرفتارانصاف کیلئے اقدامات کئے جارہے ہیں اور اس کے لئے نئے نئے طریقے متعارف کروائے جارہے ہیں، ججوں کو تربیتی کورسز کروانے کا بنیادی مقصد بھی سپیڈی جسٹس ہے۔ جسٹس امیر بھٹی نے کہا کہ فیصلہ کرنا، انصاف کرنا اللہ تبارک و تعالیٰ کی صفت ہے اور ہم خوش نصیب ہیں کہ ہم اللہ تعالیٰ کی اس صفت کے امین ہیں۔ اختتامی تقریب میں لاہور ہائی کورٹ کے قائم مقام رجسٹرار لاہور ہائیکورٹ اشترعباس اور ڈی جی پنجاب جوڈیشل اکیڈمی حبیب اللہ عامر سمیت اکیڈمی کے انسٹرکٹرز اور افسران بھی موجود تھے۔تقریب کے اختتام پر جسٹس محمد امیر بھٹی نے تربیتی کورس مکمل کرنے والے ایڈیشنل سیشن ججوں اور سول ججوں میں اسناد بھی تقسیم کیں۔

بیوقوف ترین

مزید : صفحہ آخر