سانحہ تیز گام ایکسپریس،نشتر ہسپتال میں ایک اور زخمی چل بسا،لاشوں کی شناخت کیلئے ڈی این اے سیمپل لاہور منتقل

سانحہ تیز گام ایکسپریس،نشتر ہسپتال میں ایک اور زخمی چل بسا،لاشوں کی شناخت ...

  



ملتان، رحیم یار خان، میرپور خاص(نیوز ایجنسیاں، مانیٹرنگ)سانحہ تیزگام ایکسپریس کا ایک اور زخمی نشترہسپتال ملتان میں چل بسا،سانحہ میں جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 75 ہو گئی،دوسری طرف سانحہ تیز گام کے 9 مریضوں کا ملتان کے برن یونٹ اور نشتر ہسپتال میں علاج جاری ہے۔ جن میں سے 5 مریضوں کی حالت تشویشناک ہے۔ملتان منتقل کئے گئے 9 مریضوں میں سے 5 کو ہیڈ انجری اور ہڈی ٹوٹنے کے باعث کے باعث نشتر ہسپتال کے سرجیکل یونٹ منتقل کیا گیا۔سندھ کے شہر میر پور خاص کے کئی افراد تیزگام سا نحہ میں جاں بحق ہوئے جس کے باعث تیسرے روز بھی شہر کی فضا سوگوار نظرآئی، ٹرین کے المناک حادثے میں جان سے گئے میر پور خاص اور عمر کوٹ سے تعلق رکھنے والے اب تک 11 افراد کی میتیں لواحقین کے حوالے کی جا چکی ہیں۔جاں بحق اور لاپتہ افراد کے گھروں پر تعزیت کیلئے آنے والوں کا سلسلہ جاری رہا، میر پور خاص سے ٹرین میں 84سے زائد افراد روانہ ہوئے تھے۔سانحہ رحیم یار خان میں جاں بحق 57 افراد کی شناخت کیلئے ڈی این اے سیمپلنگ مکمل کرلی گئی، نمونے لاہور بھجوا دئیے گئے، سیمپل میچ ہونے پر شناخت کا عمل 10 روز تک مکمل ہوگا۔رحیم یار خان کے شیخ زید ہسپتال میں 57 لاشیں موجود ہیں جن کی شناخت میں مشکل پر ڈین این اے کیلئے لاشوں سے نمونے حاصل کئے گئے، جاں بحق افراد کے ورثا کو بھی طلب کیا گیا اور سیمپلنگ کیلئے ان کے نمونے بھی حاصل کر لئے گئے ہیں۔ہسپتال ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈی این اے کے ذریعے لاشوں کی شناخت کا عمل 10 روز تک مکمل کر لیا جائے گا، سیمپل میچ ہونے کے بعد لاشیں ورثاء کے حوالے کی جائیں گی۔ڈی سی آفس کے کنٹرول روم میں 45 ایسے افراد کی فہرست تیار کی گئی ہے جو حادثے کے بعد سے لاپتہ ہیں۔لواحقین کو انتظار کرنے کا کہا جا رہا ہے۔

تیز گام سانحہ

مزید : صفحہ آخر