دنیا کے سب سے بڑے درآمدی میلے کی تیاریاں مکمل

دنیا کے سب سے بڑے درآمدی میلے کی تیاریاں مکمل
دنیا کے سب سے بڑے درآمدی میلے کی تیاریاں مکمل

  

دنیا کے سب سے بڑے درآمدی میلے کی تیاریاں مکمل کر لی گئیں ہیں۔ کووڈ-19 کے وبائی تناظر کے باوجود تیسری چائنا انٹر نیشنل امپورٹ ایکسپو  ہر سال کی طرح پانچ تا دس نومبر چین کے شہر شنگھائی میں منعقد ہوگی۔  اس نمائش کا موضوع نئے عہد میں   مشترکہ مستقبل کاحصول ، اسی موضوع کے تحت چائنا انٹرنیشنل امپورٹ ایکسپو دنیا کے تمام ممالک اور علاقوں سے تعلق رکھنے والے بڑے کاروباری اداروں، انفرادی کاروبار کرنے والوں اور سنجیدہ خریداروں کو دنیا کی سب سے بڑی منڈی میں مسابقتی ماحول میں ترقی کے مواقع فراہم کرتی ہے۔ پہلی چائنا انٹرنیشنل امپورٹ ایکسپو کے انعقاد سے اب تک چین کی حکومت نے اس پلیٹ فارم کو آزادانہ تجارت اور معاشی عالمگیریت کے استحکام اور فروغ کے لئے بھرپور انداز میں فعال بنایا ہے۔ کووڈ-19 کی وبا کے تناظر میں موجودہ ایکسپو کی اہمیت اور بھی زیادہ بڑھ گئی ہے۔ اس ایکسپو کے کامیاب انعقاد سے عالمی معیشت کی بحالی کے حوالے سے کاروباری حلقوں کے اعتماد میں اضافہ ہوگا۔ حالیہ نمائش کا رقبہ تین لاکھ ساٹھ ہزار مربع میٹر ہے۔ جس میں گزشتہ ایکسپو سے تقریباً 60 ہزار مربع میٹر کا اضافہ کیا گیا ہے۔ 

تیسری چائنا انٹرنیشنل امپورٹ ایکسپو یعنی ہونگ چھیاؤ بین الاقوامی اکنامک فورم کی افتتاحی تقریب چار نومبر کو چین کے شہر شنگھائی میں منعقد ہوگی۔چینی صدر شی جن پھنگ ویڈیو لنک کے ذریعے مرکزی خطاب کریں گے۔       

تیسری چائنا انٹرنیشنل امپورٹ ایکسپو کے انعقاد کے انتظامات مکمل کرکے چین نے دنیا کو یہ دکھایا ہے کہ وبا کے نہایت مشکل اور کٹھن تناظر کے باوجود چین بین الاقوامی کاروباری اداروں کو محفوظ ماحول فراہم کرنا چاہتا ہے اور یہ محض ایک خواہش نہیں ہے بلکہ عملی طور پر بھی ممکن ہے۔ یہ ایکسپو چین کی جانب سے عالمی معیشت کی بحالی میں بہت مدد گار ثابت ہوگی۔ 

دنیا کے بیشتر ممالک میں کووڈ-19 کے کیسز نہایت تیزی سے بڑھ رہے ہیں یورپ سمیت کئی خطوں میں وبا کی دوسری لہر کے اثرات نمایاں ہونا شروع ہوگئے ہیں ایسے میں تیسری چائنا انٹرنیشنل امپورٹ ایکسپو عالمی تجارت کے لئے امید کی ایک کرن ہے۔ 

چائنا انٹرنینشل امپورٹ ایکسپو کے تیسرے ایڈیشن نے دنیا بھر کے تاجروں کو کساد بازاری اور وبا کے اس دور میں ایک محفوظ مقام پر مصنوعات اعتماد کے ساتھ پیش کرنے کا موقع فراہم کیا ہے۔ یہاں آنے والوں کو یہ موقع ملے گا کہ وہ دنیا کی دوسری بڑی معیشت کے ساتھ کام کریں۔ یہ میلہ ان لوگوں کے لئے اہم ہے جو اپنے ملک اور چین کے مابین تجارت کے دروازے مزید کھلے کرنا چاہتے ہیں۔ 

یہ ایکسپو ان ممالک اور خطوں کے تاجروں کو بھی ایک بڑا موقع فراہم کرے گی جو وبا کی وجہ سے پیدا ہونے والی شدید کساد بازاری کی وجہ سے مشکلات کا شکار ہیں۔عالمگیریت کا یہ کا تقاضا ہے کہ تمام ممالک باہم مربوط ہوں۔ تجارت اسی باہمی رابطے کا ایک حصہ ہے۔ آج ، دنیا کے بیشتر ممالک اور علاقوں کے تاجر چین کے ساتھ اپنی تجارت میں خاطر خواہ اضافہ کر رہے ہیں اور وہ اپنے تجارتی ساتھی چین کی معاشی بحالی مسرور اور مطمئن نظر آتے ہیں۔ 

چائنا جنرل ایڈمنسٹریشن آف کسٹمز کے متعلقہ اہل کار کا کہنا ہے کہ اس نمائش میں بہتری اور اس کے کامیاب انعقاد کے لیے کسٹم کلیئرنس کے اختیار کردہ سابقہ اقدامات کی بنیاد پر موجودہ نمائش کے منتظمین اور نمائش کنندگان کی ضروریات کے مطابق حالیہ اقدامات کو مزید بہتر بنایا گیا ہے اور سرحد پار سے ای کامرس کاروبار کے حوالے سے زیادہ مدد فراہم کی جائے گی ۔ 

اطلاعات کے مطابق تیسری بین الاقوامی درآمدی نمائش میں نمائشی ہالز کا رقبہ پچھلی مرتبہ سے زیادہ ہے اور ان ہالز کی ترتیب بھی پہلے سے زیادہ بہتر ہے ۔ 

چائنا انٹرنیشنل امپورٹ ایکسپو دی بیلٹ اینڈ روڈ سے وابستہ ممالک کی مصنوعات کو چین اور دنیا بھر میں متعارف کروانے میں بھی اہم کردار ادا کر رہی ہے۔ تیسری چائنا انٹرنیشنل امپورٹ ایکسپو نہ صرف دی بیلٹ اینڈ روڈ سے وابستہ معیشتوں بلکہ عالمی تجارت کے لئے بھی امید کی ایک کرن ہے۔ یہ معاشی تعاون اور تجارت کو مستحکم کرنے اور عالمی تجارت اور عالمی معاشی نمو کو فروغ دینے کے لئے پوری دنیا کے ممالک اور خطوں کو سہولت فراہم کرتی ہے تاکہ عالمی معیشت کو مزید کھلا بنایا جاسکے۔ چینی حکومت پوری دنیا میں سرکاری عہدیداروں ، کاروباری برادریوں ، نمائش کنندگان اور پیشہ ور خریداروں کو اس میں حصہ لینے اور چینی منڈی کو تلاش کرنے کے لئے ان کا خیرمقدم کرتی ہے۔ 

۔

  نوٹ:یہ بلاگر کا ذاتی نقطہ نظر ہے جس سے ادارے کا متفق ہونا ضروری نہیں ۔

 ۔

اگرآپ بھی ڈیلی پاکستان کیساتھ بلاگ لکھنا چاہتے ہیں تو اپنی تحاریر ای میل ایڈریس ’zubair@dailypakistan.com.pk‘ یا واٹس ایپ "03009194327" پر بھیج دیں.

مزید :

بلاگ -