40سال قبل حکم پر عملدرآمد نہ ہونے کیخلاف درخواست پر سماعت، فیصلہ محفوظ

 40سال قبل حکم پر عملدرآمد نہ ہونے کیخلاف درخواست پر سماعت، فیصلہ محفوظ

  

 ملتان (خصو صی  ر پو رٹر)ہائیکورٹ ملتان بینچ کے جسٹس انوار حسین نے سپریم کورٹ کے 40 سال قبل حکم پر عملدرآمد نہ ہونے کے خلاف درخواست پر سماعت کے (بقیہ نمبر48صفحہ7پر)

بعد فیصلہ محفوظ کر لیا ہے۔ فاضل عدالت میں مرزا واجد بیگ نے درخواست دائر کی تھی کہ اس کو اپنے کلیم کے بدلے حکومت نے چاہ بوہڑ والہ میں پلاٹ الاٹ کیا لیکن اہل علاقہ نے اس پر گرلز ہائی سکول تعمیر کرا دیا جس پر مختلف عدالتوں کے بعد 40 سال قبل سپریم کورٹ نے درخواست گذار کو آمادہ کر کے 500 مربع گز کا پلاٹ دینے کا حکم دیا لیکن اس پر تاحال عملدرآمد نہیں ہو سکا جس پر فاضل عدالت میں توہین عدالت کی درخواست دائر کی تو ایڈیشنل کمشنر نے 20 سال بعد رپورٹ جمع کرائی اور تاحال فیصلے پر عملدرآمد نہیں ہو سکا۔ درخواست گذار کے وکیل نے دلائل دئیے کہ جب ملک کی اعلی ترین عدالت کے احکامات پر عملدرآمد نہیں ہو سکتا تو سائل کہاں جائیں۔ سائل کی جانب سے اپنا کلیم چھوڑنے اور صرف 500 مربع گز کا پلاٹ لینے کا بیان دینے کی قربانی بھی کام نہیں آئی اور اس کی اولاد آج تک کرائے کے مکانوں میں دھکے کھاتی پھر رہی ہے۔

سماعت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -