پشاور ہائیکورٹ کا فیصلہ جمہوریت کی مضبوطی ہے‘ حاجی غلام علی 

پشاور ہائیکورٹ کا فیصلہ جمہوریت کی مضبوطی ہے‘ حاجی غلام علی 

  

پشاور(سٹی رپورٹر) جماعتی بنیادوں پر بلدیاتی انتخابات کے بارے میں پشاور ہائی کورٹ کا فیصلہ جمہوریت اور جمہوری اداروں کی مضبوطی اور فتح ہے، جمعیت علماء اسلام کے مرکزی رہنمائاور سابق ضلع ناظم پشاور حاجی غلام علی نے پشاور ہائی کورٹ کے جسٹس روح الامین، جسٹس اعجاز انور اور جسٹس ارشدعلی پر مشتمل لاجر بنچ کے فیصلے کاخیرمقدم کرتے ہوئے ان کو زبردست الفاظ میں خراج تحسین پیش کیاہے۔ انہوں نے کہاکہ جمہوری روایات میں ایسے فیصلے اسمبلیوں میں ہوا کرتی ہے لیکن موجودہ حکومت نے جس طرح اسمبلیوں کو بے توقیرکیاماضی میں اس کی مثال نہیں ملتی۔ آج اسمبلیاں گفتاََ، نشتاََبرخاستاََ پر چل رہی ہے، اپنے آپ کومنتخب اراکین کہنے والے اسمبلیوں میں مہنگائی اور بے روزگاری سمیت جمہوریت کے لئے بات کرنے کی طاقت سے منتخب اراکین کوبھی محروم کردیاہے اور اسمبلیوں کو بے توقیر کیاگیا، ایسی صورتحال میں ہمیشہ عدالت عالیہ نے فیصلے صادرکیے اور جماعتی بنیادوں پر بلدیاتی انتخابات کرانے کے عدالت عالیہ پشاور کورٹ کا فیصلہ نہ صرف تاریخ میں سنہر ے حروف میں لکھا جائے گا بلکہ جمہوریت کی نرسری، بلدیاتی اداروں میں جمہوریت کی پختگی اور سیاسی جماعتوں کے پروگرام ومنشور لے کر اس نرسری سے پشاور ہائی کورٹ کے فیصلے کے تحت منجھے ہوئے سیاسی کارکن نکلے گی، ماضی میں غیر جماعتی بنیادوں پربلدیاتی انتخابات کرکے سیاسی ڈھانچے اور نظریاتی سیاست کو زمین بوس کرکے اقرباء پروری ذاتی مفادات کیلئے راتوں رات وفاداریاں تبدیل کرنے کا ایک نہ رکھنے والا سلسلہ شروع کیا تھا۔ پشاور ہائی کورٹ کے اس فیصلے سے ذاتی مفادات کیلئے وفاداریاں تبدیل کرنے کی نہ صرف حوصلہ شکنی ہوگی بلکہ مستقبل قریب میں اس نرسری سے پشاور ہائی کورٹ پشاور کے فیصلے کے تحت پختہ ذہنیت سیاسی کارکن جماعتی وابستگی کے سوچ رکھنے والے نکلے گی۔ انہوں نے کہاکہ ہم پشاور ہائی کورٹ پشاور کے اس فیصلے کو خراج تحسین پیش کرتے ہے اس فیصلے سے ملک میں بلدیاتی اداروں کے علاوہ سیاسی سوچ اور وژن پختہ ہوجائے گی۔ انہوں نے کہاکہ پی ٹی آئی لیڈرشپ کنٹینر پر کھڑے ہو کر بلدیاتی اداروں کو جمہوریت کی ریڑھ کی ہڈی سمجھتے تھے لیکن آج اپنی ہی حکومت میں گزشتہ تین سالوں سے بلدیاتی انتخابات کرانے سے گریزاں ہے جبکہ مہنگائی اوربے روزگاری سے پہلے ہی عوام کی زندگی اجیرن کردی، انشائاللہ آنے والے بلدیاتی انتخابات میں عوام ووٹ کے ذریعے ا ن کا جنازہ نکال کر ان کے تابوت میں آخری کیل ثابت ہوگی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -