جنوبی پنجاب ہائی ویلیوکراپس کی کاشت کیلئے بہترین، فیصل ظہور

  جنوبی پنجاب ہائی ویلیوکراپس کی کاشت کیلئے بہترین، فیصل ظہور

  

ملتان (سپیشل رپورٹر)سیکرٹری زراعت جنوبی پنجاب ڈاکٹر فیصل ظہورنے کہا ہے کہ جنوبی پنجاب کا خطہ ہائی ویلیوکراپس کی کاشت کیلئے موزوں ہے۔پھلوں (بقیہ نمبر17صفحہ6پر)

 اور سبزیوں کی پیداوار اور کوالٹی میں اضافہ کی کافی گنجائش موجود ہے۔جدید پیداواری ٹیکنالوجی پر عملدرآمد کرکے کاشتکار فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ ممکن بناسکتے ہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایگریکلچر سیکرٹریٹ کے کمیٹی روم میں شعبہ ہارٹیکلچر کی کارکردگی کا جائزہ لینے کے حوالے سے منعقدہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے مزید کہا کہ پھلوں کی ایسی اقسام کی کاشت کو فروغ دیا جائے جن کی بیرون ممالک مانگ زیادہ ہے تاکہ برآمدی حجم میں اضافہ کرکے زیادہ سے زیادہ زرمبادلہ کمایا جاسکے۔انہوں نے متعلقہ افسرا ن کو ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ آم ودیگر پھلوں کی جدید پیداواری ٹیکنالوجی فراہم کرنے کیلئے گاؤں کی سطح پر موثرٹریننگ پروگرامز منعقد کئے جائیں جہاں پرکاشتکاروں کی بھرپور فنی رہنمائی کی جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ جنوبی پنجاب میں سبزیوں اور پھلوں کی پیداور میں اضافہ کیلئے جاری سرگرمیوں کی مانیٹرنگ بھی کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ نئے باغات ہائی ایفیشینسی اریگیشن سسٹم کے تحت لگائے جائیں تاکہ پانی کی بچت کے ساتھ دیگر زرعی مداخل کے متناسب ومناسب استعمال سے پیداواری لاگت میں کمی اور پیداوار میں اضافہ کیا جاسکے۔انہوں نے کہا کہ فروٹ پلانٹ نرسریوں کا سروے کرکے ان کی رجسٹریشن کی جائے اور نرسری مالکان کی استعداد کار بڑھائی جائے۔ انہوں نے کہا کہ صحیح النسل پھلدار پودوں کے فروغ سے نہ صرف بیماریوں پر کنٹرول ہوسکے گا بلکہ پیداوار میں بھی خاطر خوا اضافہ ہوگا۔اس موقع پر ہارٹیکلچرسٹ اخلاق احمد نے بریفننگ دیتے ہوئے بتایا کہ جنوبی پنجاب کی آب و ہوا کے مطابق پھلدار پودوں کے جرم پلازم کی تیاری،کاشتکاروں کو تصدیق شدہ صحیح النسل پودوں کی فراہمی کے منصوبہ پر عملدرآمد جاری ہے۔ جنوبی پنجاب کے علاقوں چولستان اورڈی جی خان کی غیرآباد زمینوں میں اس پراجیکٹ کے تحت ایک ایکڑ میں کھجور،انار،آم،امرود،لیمن،زیتون اور بیر کے 120پودے لگائے جائیں گے۔اس موقع پر ڈپٹی ڈائریکٹر فروٹ اینڈ ویجیٹیبل محمد جمیل غوری نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ پھلوں کی پیداوار میں اضافہ کیلئے 360 ملین روپے کے پراجیکٹ کے تحت کاشتکاروں کو تصدیق شدہ صحیح النسل پودے فراہم کئے جائیں گے۔ جنوبی پنجاب میں کل306فروٹ نرسریاں قائم ہیں جن میں سے 107رجسٹرڈ ہوچکی ہیں جبکہ باقی نرسریوں کے رجسٹریشن کا پراسس جاری ہے۔انہوں نے بتایا کہ رجسٹرڈ نرسری مالکان کو حکومت کی جانب سے3لاکھ روپے سبسڈی فی نرسری بذریعہ قرعہ اندازی فراہم کی جارہی ہے۔قبل ازیں شعبہ ایگریکلچر مارکیٹنگ کے افسران سے گفتگو کرتے ہوئے سیکرٹری زراعت جنوبی پنجاب نے کہا کہ زرعی منڈیوں میں اجناس کی نیلامی کی روزانہ کی بنیاد پر خود مانیٹرنگ کو یقینی بنائیں تاکہ عوام کو ریلیف مل سکے۔ انھوں نے مزید کہا کہ  زرعی منڈیوں میں صفائی ستھرائی کے انتظامات بہتر بنائے جائیں اور پینے کیلئے صاف پانی کی فراہم ی یقینی بنائی جائے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -