نشتر ہسپتال، چھت سے لاشیں ملنے کا معاملہ، کیس کی سماعت نو نومبر تک ملتوی 

نشتر ہسپتال، چھت سے لاشیں ملنے کا معاملہ، کیس کی سماعت نو نومبر تک ملتوی 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 
 ملتان(خصو صی  رپورٹر)ایڈیشنل سیشن جج ملتان حسن احمد نے نشتر(بقیہ نمبر29صفحہ6پر)
 ہسپتال ملتان کی چھت سے ملنے والی نعشوں کی بے حرمتی کے معاملہ میں ملوث لوگوں کے خلاف مقدمہ کے اندراج سے متعلق  درخواست پر سماعت فریقین کی جانب سے رپورٹ جمع کرانے کے انتظار میں 9 نومبر تک ملتوی کرنے کا حکم دیا ہے۔یاد رہے کہ نعشوں کو ڈی این اے ٹیسٹ کے بعد ملتان کے مختلف قبرستانوں میں دفن کیا جاچکا ہے۔ قبل ازیں فاضل عدالت میں ایڈووکیٹ محمد وقاص یوسف نے اندراج مقدمہ کی درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ نشتر ہسپتال کی چھت سے 76 نعشیں برآمد ہوئیں، جو انسانیت کی تذلیل کے مترادف ہیں، درخواست میں مزید کہا کہ ملک بھر میں نعشوں کی برآمدگی پر چہ مگوئیاں ہوئیں، لوگوں میں تشویش پائی جاتی ہے۔ پیٹشنر نے ایم ایس نشتر ہسپتال، ہیڈ آف ڈیپارٹمنٹ نشتر میڈیکل کالج و یونیورسٹی، ایچ او ڈی اناٹومی، انچارج پوسٹ مارٹم، انتظامیہ، انچارج سیکورٹی، پولیس اہلکاروں اور 1122 سروسز سمیت دیگر کے خلاف مقدمہ درج کرنے کی استدعا کی ہے۔