" وفاقی حکومت بیرون ملک مقیم پاکستانیوں سے ان کے بیرون ملک اثاثوں کے متعلق پوچھ سکتی ہے" لاہور ہائیکورٹ کے اہم ریمارکس

" وفاقی حکومت بیرون ملک مقیم پاکستانیوں سے ان کے بیرون ملک اثاثوں کے متعلق ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) لاہور ہائی کورٹ نے مسلم لیگ ق کے رہنماءاور سابق وفاقی وزیر چوہدری مونس الٰہی سمیت دیگر لوگوں کی بیرون ملک جائیدادوں پر عائد وفاقی ٹیکس کے خلاف درخواستوں پر وکلاءکو دلائل کے لیے طلب کر لیا۔ دی نیوز کے مطابق عدالت عالیہ نے اپنے ریمارکس میں کہا ہے کہ بادی النظر میں وفاقی حکومت بیرون ملک مقیم پاکستانیوں سے ان کے بیرون ملک موجود اثاثوں کے متعلق پوچھ سکتی ہے۔ 

ہائی کورٹ نے ایف بی آر کے وکیل کی عدم پیشی پر سماعت آج تک کے لیے ملتوی کر دی۔ لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس عاصم حفیظ نے مونس الٰہی سمیت دیگر لوگوں کی طرف سے دائر کی گئی 30درخواستوں کی سماعت کی۔ درخواست گزاروں کے وکلاءنے عدالت کو بتایا کہ وفاقی حکومت بیرون ملک واقع جائیدادوں پر ٹیکس وصولی کا اختیار نہیں رکھتی۔ عدالت ای پورٹل پر جرمانے کے بغیر ٹیکس ریٹرن جمع کرانے کا حکم دے۔