پنجاب میں دالوں کی پیداوار بڑھانے کے لئے 148 ملین روپے کی لاگت سے منصوبے کا آغاز

پنجاب میں دالوں کی پیداوار بڑھانے کے لئے 148 ملین روپے کی لاگت سے منصوبے کا ...

راولپنڈی (اے پی پی ) محکمہ زراعت پنجاب نے صوبہ میں دالوں کی پیداوار بڑھانے کے لئے 148 ملین روپے کی لاگت سے نئے منصوبے کا آغاز کر دیا ۔ اس منصوبے کے اہداف کے حصول کے نتیجہ میں دالوں کی فی ایکڑ پیداوار میں خاطر خواہ اضافہ ممکن ہو سکے گا جس سے کاشتکاروں کے منافع میں بھی اضافہ ہو گا اور بیرون ملک سے دالیں درآمد کرنے کی ضرورت بھی نہیں رہے گی۔محکمہ زراعت پنجاب کے مطا۱بق چنا، مسور، مونگ اور ماش اہم دالیں ہیں جو ہمارے ہاں کاشت کی جاتی ہیں لیکن ان کی فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ کی بہت گنجائش موجود ہے۔ اس وقت چنے کی اوسط پیداوار تقریباً 5 من فی ایکڑ ہے، مسور کی فی ایکڑ پیداوار بھی 4 تا 5 من فی ایکڑ ہے۔

مونگ کی فی ایکڑ پیداوار تقریباً 7 من فی ایکڑ جبکہ ماش کی پیداوار تقریباً 4من فی ایکڑ ہے۔ سائنسدانوں نے اب دالوں کی ایسی اقسام تیار کر لی ہیں جن کی پیداواری صلاحیت بہت زیادہ ہے۔ اگر جدید سفارشات پر عمل کیا جائے تو دالوں کی فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ ممکن ہے۔ دالوں میں چنے کی فصل بہت اہمیت کی حامل ہے۔ صوبہ پنجاب میں تقریباً 24 لاکھ ایکڑ رقبہ پر چنا کی کاشت کی جاتی ہے جو پاکستان میں چنے کے زیر کاشت کل رقبے کا 80 فیصد ہے۔ اگر صوبہ پنجاب میں چنے کی فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ ہو جائے تو ملکی سطح پر دالوں کی فراہمی کی صورتحال میں کافی بہتری آ سکتی ہے۔ ملک میں کابلی چنے کے استعمال میں بھی اضافہ ہوا ہے اس لئے ملکی ضروریات پورا کرنے کے لئے ایران، آسٹریلیا اور ترکی سے کابلی چنے درآمد کیے جاتے ہیں۔ محکمہ زراعت پنجاب کابلی چنے کی پیداوار بڑھانے کے لئے کاشتکاروں کو جدید سفارشات سے آگاہ کر رہا ہے اور زیر کاشت رقبہ میں اضافے کے لئے کاشتکاروں کو ترغیب دی جارہی ہے۔

مزید : کامرس


loading...