گیس انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ کے نام پر سرچارج کی وصولی غیر قانونی قرار

گیس انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ کے نام پر سرچارج کی وصولی غیر قانونی قرار
گیس انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ کے نام پر سرچارج کی وصولی غیر قانونی قرار

  

 لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک ) ہائیکورٹ نے گیس انفراسٹکچر ڈویلپمنٹ کے نام پر سرچارج وصول کرنے کے اقدام کو غیر قانونی قرار دے دیا ہے۔تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شجاعت علی خان نے کیس کی سماعت شروع کی تو عدالت کے روبرو 297 درخواست گزاروں کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا کہ وفاقی حکومت نے گیس انفراسٹرکچرکے نام پر سرچارج وصول کر رہی ہے جو غیرقانونی اور غیر آئینی ہے، صنعتی اور گھریلو صارفین اس حوالے سے پہلے ہی ٹیکس ادا کر رہے ہیں لہذا عدالت اسے کالعدم قرار دے۔ دوران سماعت وفاقی حکومت کے وکیل نے بتایا کہ یہ سرچارج ایران گیس پائپ لائن کے منصوبے کے لیے وصول کیا جا رہا ہے۔ عدالت نے تمام دلائل سننے کے بعد درخواستیں منظور کرتے ہوئے گیس سرچارج کی وصولی غیر قانونی قرار دے دی ۔

مزید : لاہور