چاند پر چہرہ نما گڑھا لاوے سے بنا:سائنسدان

چاند پر چہرہ نما گڑھا لاوے سے بنا:سائنسدان
چاند پر چہرہ نما گڑھا لاوے سے بنا:سائنسدان

  

نیویارک (ویب ڈیسک) سائنسدانوں نے انکشاف کیا ہے کہ چاند کی سطح پر انسانی چہرے کی مانند نظر آنے والا گڑھا دراصل وہاں آتش فشاں کے لاوے سے بنا تھا نہ کہ کسی ایسٹر ائڈیا سیارچے کے گرنے سے۔ چاندکی سطح پر ایک ”بیسن“ یعنی گہرا گڑھا، جسے اگر سطح زمین سے دیکھا جائے تو وہ کسی انسانی چہرے کی طرح دکھائی دیتا ہے پہلے سے لگائے جانے والے اندازوں کے برعکس آتش فشاں کے لاوے سے بنا ہے۔ نیچر نامی سائنسی جریدے میں شائع ہونے والی ایک تحقیق کے نتائج میں سامنے آئی ہے۔ یہ گڑھاقریب 3000 کلومیٹر کے رقبے پر پھیلا ہوا ہے۔ اب سے پہلے تک سائنسدانوں کی طرف سے لگائے جانے والے اندازوں کے مطابق یہ سمجھا جاتا رہا ہے کہ چاند کی سطح پر یہ منفرد خصوصیت کسی بہت بڑے سیارچے کے گرنے کے نتیجے میں نمودار ہوئی تھی اور یہ واقعہ اس وقت رونما ہوا، جب چاند قدرے نیا تھا۔

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی