الاﺅنس ختم کرنے پر الیکشن کمیشن کے ملازمین نے ہڑتال کی دھمکی دیدی

الاﺅنس ختم کرنے پر الیکشن کمیشن کے ملازمین نے ہڑتال کی دھمکی دیدی
الاﺅنس ختم کرنے پر الیکشن کمیشن کے ملازمین نے ہڑتال کی دھمکی دیدی

  


اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)الیکشن کمیشن کے 2200 ملازمین نے سیکریٹریٹ الاﺅنس کے بعد الیکشن الاﺅنس بھی ختم کرنے کے وفاقی حکومت کے فیصلے پر عید کے بعد شدید احتجاج کی حکمت عملی بنائی ہے، چھوٹے ملازمین ہڑتال پر جانے کی دھمکی دے رہیں ہیں۔

الیکشن کمیشن ذرائع کے مطابق سابق قائم مقام چیف الیکشن کمشنر جسٹس تصدق حسین جیلانی کی صدارت میں اجلاس میں ملازمین کے الیکشن الاﺅنس کو مستقل طور پر تنخواہ میں ضم کرنے کے نوٹیفکیشن کو وزارت خزانہ نے مسترد کرتے ہوئے ادا شدہ 9 ماہ کا الاﺅنس بھی واپس لے لیا ہے۔

الیکشن کمیشن ذرائع کے مطابق وزارت خزانہ کے سیکریٹری نے کہا کہ یہ اقدام وزیرخزانہ اسحاق ڈار کی ہدایت پر کیا گیا جبکہ اسحاق ڈار کی جانب سے ایسے احکامات سے لاعلمی کااظہار کیا جا رہا ہے، سیکریٹریٹ ملازمین کا 20 فیصد الاﺅنس اس بنیاد پر دینے سے انکار کیا گیا ہے کہ الیکشن کمیشن مالی خود مختار ادارہ ہے، الیکشن کمیشن ملازمین کی جانب سے الیکشن کمیشن کے حکام کی طرف سے اس معاملے کو موثر انداز میں نہ اٹھانے پر بھی شدید تحفظا ت کا اظہار کیا ہے۔

مزید : اسلام آباد


loading...