سونگھنے کی حس اور موت کا گہرا تعلق،سائنسی تحقیق میں اہم انکشافات

سونگھنے کی حس اور موت کا گہرا تعلق،سائنسی تحقیق میں اہم انکشافات
سونگھنے کی حس اور موت کا گہرا تعلق،سائنسی تحقیق میں اہم انکشافات

  


لندن(نیوزڈیسک)اگر آپ کو کھانے کی خوشبو سونگھ کر بھوک نہیں لگتی یا کوئی پرفیوم تیزی سے آپ کے نتھوں کو متاثر نہیں کرتا تو ہو سکتا ہے کہ آپ کسی سخت مرض کا شکار ہونے والے ہوں کیونکہ ایسے مرد و خواتین جو اپنی سونگھنے کی قوت سے محروم ہو چکے ہوں دیگر انسانوں کے مقابلے میں اگلے چند سال میں ان کے مرنے کے امکانات زیادہ ہوتے ہیں۔ ایک تحقیق کے مطابق مچھلی، گلاب، چمڑا، سنگترا اور پودینہ کی مہک کو شناخت کرنے کی صلاحیت کھو دینے کا مطلب ہے کہ ایسا شخص اگلے پانچ سال میں موت کی وادی میں چلا جائے گا جبکہ یہ تحقیق عجیب معلوم ہوتی ہے لیکن یہ حقیقت ہے کہ خوشبوﺅں کی شناخت کی صلاحیت میں کمی کسی بھی موذی مرض جن میں کینسر بھی شامل ہے، کی نسبت زیادہ جان لے لینے کی صلاحیت موجودہے۔ امریکی محققین کا کہنا ہے کہ اگرچہ سونگھنے کی صلاحیت سے محرومی براہ راست موت کا سبب نہیں بنتی، لیکن یہ اس بات کی علامت ہے کہ جلد ہی آپ کے ساتھ کچھ انتہائی برا ہونے والا ہے۔ ان کا ایمان ہے کہ پنشن لینے والے افراد میں محض سونگھنے کی صلاحیت کے تجزیئے سے ان کی موت کی پیش گوئی کی جا سکتی ہے۔

مزید : تفریح


loading...