وہ شرمناک جھوٹ جو کچھ فضائی مسافر وقتی فائدے کے لئے بولتے ہیں

وہ شرمناک جھوٹ جو کچھ فضائی مسافر وقتی فائدے کے لئے بولتے ہیں
وہ شرمناک جھوٹ جو کچھ فضائی مسافر وقتی فائدے کے لئے بولتے ہیں

  

لندن(نیوزڈیسک)یہ افسوس کی بات ہے کہ کسی لمبے سفر اور پرواز کے لئے ہم ٹکٹ اور دیگر اخراجات میں رعایت حاصل کرنے کے لئے اپنے آپ کو کسی مہلک بیماری کا مریض ہونے کا بہانہ کرکے بددیانتی کی انتہا کرجاتے ہ یں۔ اسے سادہ الفاظ میں رعایت کی بھیک مانگتا کہتے ہیں اور مانگنا یا بھیک مانگنا تو بہت ہی ذلت آمیز کام ہے کیا کریں بہت سے لوگ اس خرابی میں پائے جاتے ہیں۔ شاید ایسے لوگوں کو خود بھی اندازہ نہیں ہوتا کہ وہ کس قدر شرمناک کرم کررہے ہیں۔ اس ضمن میں کی گئی تحقیق کے مطابق 5 میں سے ایک فرد اس قسم کی رعایت حاصل کرنے کیلئے بیماریوں کا بہانہ کرتا ہے لیکن جب ایسے لوگ ایسی گھٹیا حرکت کرتے ہیں تو انہیں ایسے لگتا ہے جیسے وہ کسی پرتعیش جدید ایجاد کا بٹن کھول رہے ہوں یا پھر کوئی یخ شیمپئن کی بوتل کا ڈھکنا کھولنے کے لطف سے محظوظ ہورہے ہون ایک ویب سائٹ پر 5700 لوگوں سے سوال کیا گیا کہ کیا وہ کسی جہاز کا بورڈنگ کارڈ حاصل کرنے کے لئے ایسی فضول اور گھٹیا بہانے تراشیں گے تو ان میں سے 912 لوگوں نے اس پر رضامندی کا اظہار کیا کہ ہاں وہ ایسا ضرور کریں گے۔ ایک اور سروے کے مطابق ایسے لوگ عجیب و غریب بہانون کے علاوہ ایسی دلیلیں دیتے ہیں جن پر شک نہیں کیا جاسکتا جیسے ایک جوڑا جو نیا نویلا نہیں ہے لیکن وہ خود کو نیا شادی شدہ جوڑا پیش کرکے ہنی مون پیکج سے مستفید ہوتے ہیں۔ کچھ لوگ اپنی اصل ٹانگ کو پلاسٹک کی ٹانگ ظاہر کرکے ایسی نشستوں کی بکنگ کرانے میں کامیاب رہتے ہیں جہاں سپیس زیادہ ملتی ہے۔ اسی طرح کے بہانوں مین سے ایک بہانہ مصنوعی حمل کا بھی بتایا جاتا ہے۔ یہ سارے بہانے کارگر تو ثابت ہوتے ہیں لیکن ایسے کرنے کے بعد صرف اپنے ضمیر کی عدالت میں کھڑا ہوں تو اگلے موقع پر ہوسکتا ہے اپ ایسے جھوٹے بہانے بنا کر کسی قسم کی رعایت لینے پر شرمندگی محسوس کریں اور بہانے بنانے سے باز رہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس