اسرائیلی وزیراعظم کا اقوام متحدہ میں دنیا کے سامنے ڈرامہ

اسرائیلی وزیراعظم کا اقوام متحدہ میں دنیا کے سامنے ڈرامہ
اسرائیلی وزیراعظم کا اقوام متحدہ میں دنیا کے سامنے ڈرامہ

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

نیویارک (نیوز ڈیسک) اسرائیلی وزیراعظم بینجمن نیتن یاہو نے گزشتہ روز اقوام متحدہ سے اپنا زہر بھرا خطاب کیا تو اپنی جارحیت کو ایک مذموم ڈرامے کی صورت میں پیش کئے بغیر نہ رہ سکے۔ نیتن یاہو نے اپنے خطاب میں ایران کے ساتھ مغربی طاقتوں کے جوہری معاہدے کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔

کیا آپ ناپسندیدہ میسجز اور کالز وصول کرنے سے تھک گئے ہیں؟ تو یہ خبر آپ کے لئے ہے

ان کا کہنا تھا کہ ایران کے جوہری عزائم اسرائیل کے وجود کے لئے خطرہ ہیں اور اس موقع پر وہ اقوام متحدہ کے کردار پر سخت شاکی نظر آئے۔ ان کا کہنا تھا کہ ایران کے ساتھ جوہری معاہدے پر اقوام متحدہ نے مکمل خاموشی اختیار کئے رکھی، اور یہ الفاظ کہنے کے بعد وہ سخت نظروں کے ساتھ اپنے سامنے بیٹھے عالمی رہنماﺅں کو گھورنے لگے۔ وہ تقریباً ایک منٹ تک سامعین کو کھا جانے والی نظروں سے گھورتے رہے، اور ان کے اس عمل پر تمام رہنما خاصے نالاں نظر آئے۔

بیوی کا شوہر کے ساتھ بہت بڑا دھوکہ، سالوں تک جسے اپنا بچہ سمجھتا رہا وہ۔۔۔

انہوںنے اپنے خاموش احتجاج کے بعد دھمکی آمیز لہجے میں یہ بھی کہا کہ یہودیوں کے ساتھ زیادتی کے جواب میں خاموش رہنے کے دن جا چکے ہیں۔ عالمی سفارتی حلقوں میں اسرائیلی وزیراعظم کے طرز عمل کو سخت نا پسندیدگی کی نظر سے دیکھا جا رہا ہے۔

مزید : بین الاقوامی