سرکاری شعبہ کے ترقیاتی پروگرام سے ترقی و خوشحالی کے نئے دور کا آغاز ہو گا

سرکاری شعبہ کے ترقیاتی پروگرام سے ترقی و خوشحالی کے نئے دور کا آغاز ہو گا

اسلام آباد (اے پی پی) مالی سال 2015-16 ء کے سرکاری شعبہ کے ترقیاتی پروگرام سے ملک میں ترقی و خوشحالی کے ایک نئے دور کا آغاز ہو گا ۔ سماجی وانسانی ترقی کے منصوبوں ، پانی ،توانائی اور خوراک کے شعبوں میں سرمایہ کاری سے عوام کی زندگی میں بہتری آئے گی۔اقتصادی راہداری کے مغربی حصے سے متعلق منصوبوں پر کام تیزی سے جاری ہے جودسمبر 2016 ء تک مکمل ہوجائے گا ۔

،چین پاکستان اقتصادی راہداری سے ملک کے تمام صوبے مستفید ہونگے جبکہ بلوچستان خیبر پختونخواہ اور فاٹا کو خصوصی طور پر فائدہ ہوگا۔ چین پاکستان اقتصادی راہداری وزیراعظم نواز شریف اور اعلیٰ چینی قیادت کاوژن ہے جس کے تحت چین اور پاکستان کے درمیان تاریخی رابطوں کو بحال کرنا اور مزید بہتر طور پر تعمیر کرنا اور آخر کار اس کو وسط ایشیا اور مغربی ایشیا تک بڑھایا جاناہے۔ اس کلیدی منصوبے کو مکمل ہونے سے پاکستانی معیشت کی تقدیر بدل جائے گی۔وفاقی حکومت نے آئندہ مالی سال 2015-16ء کے دوران چین پاکستان اقتصادی راہداری( سی پی ای سی) کیلئے سرکاری شعبہ کے ترقیاتی پروگرام( پی ایس ڈی پی) کے تحت58 ارب10 کروڑ روپے کا بجٹ مختص کیا ہے۔وفاقی حکومت نے بجٹ میں چین پاکستان اقتصادی رہداری کے منصوبے کو خصوصی اہمیت دے رہی ہے تاکہ اس کی تکمیل سے ملک کی اقتصادی اور معاشی ترقی اور خوشحالی کے اہداف میں مدد حاصل کی جاسکے۔تقریباً 46 ارب ڈالر مالیت سے سڑکوں، ریلوے ، ٹیلی کام ، گوادر پورٹ ، اور توانائی کے مختلف منصوبوں کی تعمیر کے تاریخی معاہدے پر دستخط کیے۔ CPEC دونوں برادر ممالک اور خطے کو جوڑنے کی اہم بنیاد ہے۔یہ کوریڈور گیم چینجرکی صلاحیت رکھتا ہے۔ ملک اور اس کے عوام خوشحالی کی اس منزل کو پا لیں گے جس کی ان سے توقع ہے۔

مزید : کامرس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...