حکومت عوام کو بھرپور طبی سہولیات کی فراہمی کیلئے کوشاں ہے،سلمان رفیق

حکومت عوام کو بھرپور طبی سہولیات کی فراہمی کیلئے کوشاں ہے،سلمان رفیق

لاہور(خبر نگار خصوصی) مشیر صحت پنجاب خواجہ سلمان رفیق نے کہا ہے کہ حکومت عوام کو زیادہ سے زیادہ طبی سہولیات کی فراہمی یقینی بنانے کیلئے عملی اقدامات کر رہی ہے جس کیلئے صوبے کے مختلف شہروں میں نئے ہسپتال تعمیر کئے جا رہے ہیں۔ انہوں نے یہ بات محکمہ صحت پنجاب کے ترقیاتی منصوبوں کا ویڈیولنک کے ذریعے جائزہ لینے کیلئے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ اجلاس میں سیکرٹری صحت جواد رفیق ملک، ایڈیشنل سیکرٹری ڈویلپمنٹ محمود حسن، چیف پلاننگ آفیسر عبدالحق بھٹی اور دیگر افسران نے شرکت کی۔اجلاس میں مختلف ترقیاتی منصوبوں کا تفصیلی جائزہ لیاگیا۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ واہ کینٹ تحصیل ٹیکسلا کے علاقے میں جنرل ہسپتال تعمیر کیا جا رہا ہے جس پر مجموعی طور پر ایک ارب 35کروڑ روپے لاگت آئے گی۔ اس منصوبے پر 25کروڑ روپرے خرچ کئے جاچکے ہیں جبکہ رواں سال اس کیلئے 10کروڑ روپے مختص کئے گئے ہیں۔ خواجہ سلمان رفیق نے کہاکہ واہ کینٹ میں جنرل ہسپتال کی تعمیر مکمل ہونے سے علاقے کے لوگوں کو مقامی سطح پر علاج معالجہ کی معیاری سہولیات دستیاب ہوں گی اور انہیں اس مقصد کیلئے راولپنڈی یا دیگر بڑے شہروں میں جانا نہیں پڑے گا۔ خواجہ سلمان رفیق نے کہا کہ پہلے فیز میں مذکورہ ہسپتال100بستروں سے شروع کیا جائے گا۔اجلاس کو بتایاگیا کہ چلڈرن ہسپتال ملتان میں مزید توسیع کے منصوبے پر بھی کام جاری ہے اور مزید 150بستروں کا اضافہ کیا جا رہا ہے اور رواں مالی سال میں 20کروڑ روپے اس منصوبے کیلئے رکھے گئے ہیں۔چلڈرن ہسپتال ملتان کے منصوبے کی کل لاگت 1872ملین روپے ہے۔چیف پلاننگ آفیسر عبدالحق بھٹی نے بتایا کہ توسیعی منصوبے کی بلڈنگ مکمل ہوچکی ہے، فرشوں کی رگڑائی،False Ceiling،پائپ فٹنگ اور دیگر سول ورک تیزی سے جاری ہے۔ مزیدبرآں لفٹوں کی تنصیب کا کام بھی کیا جا رہا ہے خواجہ سلمان رفیق نے ہدایت کی کہ تمام ترقیاتی منصوبوں کو مقررہ وقت میں مکمل کرنے اور تعمیراتی کام میں اعلیٰ معیار کو ترجیح دی جائے اور حکومت کی جانب سے فراہم کردہ فنڈز کا استعمال بہترین طریقہ سے دیانت داری کے ساتھ کیا جائے۔ خواجہ سلمان رفیق نے کہاکہ ڈینگی آؤٹ بریک کوکنٹرول کرنے کے سلسلے میں اقدامات کی نگرانی کیلئے وہ وزیراعلیٰ کی ہدایت کے مطابق ابھی راولپنڈی میں ہیں تاہم محکمہ صحت کے معمول کے دیگر کاموں کو نظراندازنہیں ہونا چاہیے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1