مقدمات قائم کرنے سے کشمیریوں کے جذبات حریت کو سرد نہیں کیا جا سکتا ،حافظ سعید

مقدمات قائم کرنے سے کشمیریوں کے جذبات حریت کو سرد نہیں کیا جا سکتا ،حافظ سعید

لاہور(نامہ نگار)امیر جماعۃالدعوۃ پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ آٹھ لاکھ بھارتی فوج نے کشمیر میں ظلم کی انتہا کر رکھی ہے۔ آسیہ اندرابی کو محض پاکستانی پرچم لہرانے پر جیل میں اذیتیں دی جارہی ہیں۔بغاوت کے مقدمات قائم اور جیلوں میں ڈالنے سے کشمیریوں کے جذبہ حریت کو سرد نہیں کیا جاسکتا۔آسیہ اندرابی اور دیگر حریت قیادت کو فی الفور رہا کیا جائے۔حکومت پاکستان عالمی سطح پر اس مسئلہ کو بھرپور انداز میں اٹھائے۔دہشت گردی میں پاکستان نہیں بھارت ملوث ہے۔ جامع مسجد القادسیہ میں خطبہ جمعہ کے دوران انہوں نے کہاکہ ہندوستانی وزیر خارجہ سشما سوراج نے وزیر اعظم نواز شریف کے جواب میں جنرل اسمبلی میں تقریر کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان دہشت گردی ختم کرے تو پھر اس کے ساتھ مذاکرات ہوں گے اور یہ کہ آزاد کشمیر سے فوج نکالی جائے۔ہم سمجھتے ہیں کہ حکومت پاکستان کو صاف طور پر کہنا چاہیے کہ کشمیر دونوں طرف ہے تاہم آزاد کشمیر میں ہر شہری آزاد اور اپنی مرضی سے زندگی بسر کر رہا ہے۔یہاں آزادانہ طور پر حکومتوں کا انتخاب ہوتا ہے‘ کسی کو جیلوں میں نہیں ڈالا گیا اور نہ ہی کسی کے حقوق غصب کئے گئے ہیں لیکن اس کے برعکس مقبوضہ کشمیر کے ہر شہر اور گلی کوچے میں ظلم وبربریت کی نئی تاریخ رقم کی جارہی ہے۔دختران ملت کی سربراہ سیدہ آسیہ اندرابی پر پاکستانی پرچم لہرانے کے جرم میں بغاوت کا مقدمہ درج کیا گیا اور عدالتی احکامات کے باوجود انہیں رہا نہیں کیا جارہا۔انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم نواز شریف کی جانب سے جنرل اسمبلی میں مسئلہ کشمیر پر دوٹوک موقف اختیار کرنے کی ہم تائید کرتے ہیں۔ فلسطین کا مسئلہ اجاگر کرنا بھی خوش آئند ہے لیکن برما کے مسلمانوں کی حالت زار بھی دنیا کے سامنے بیان کرنیکی ضرورت ہے اورجنرل اسمبلی میں یہ بات کہنی چاہیے کہ سرمایہ دارانہ نظام ہی دنیا میں سارے ظلم، فساد اور دہشت گردی کی بنیاد ہیں۔صلیبیوں ویہودیوں کو کس نے یہ حق دیا ہے کہ وہ لاکھوں انسانوں کا قتل عام کریں اور بارود برسا کرملکوں پر قبضے کریں؟آج جو یہ باتیں کرے گا حقیقت میں وہی اسلام کی نمائندگی کرے گا۔ آپ ایسا کرنے کی جرأت کریں پورا عالم اسلام ان شاء اللہ آپ کے شانہ بشانہ ہو گا۔

مزید : علاقائی