ٖوزیراعظم نے کشمیر،فلسطین کے ایشو پر جاندار موقف پیش کیا، ساجد میر

ٖوزیراعظم نے کشمیر،فلسطین کے ایشو پر جاندار موقف پیش کیا، ساجد میر

لاہور (نامہ نگار) امیر مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان پروفیسر ساجد میرنے کہا کہ بھارت نے وزیر اعظم نوازشریف کا 4 نکاتی امن فارمولہ مسترد کرکے روائتی ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کیا ہے۔وزیراعظم نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں کشمیر اور فلسطین کے ایشو پر پر جاندار موقف پیش کیا، جس کا فلسطینی اور کشمیری قیادت خیر مقدم کررہی ہے۔ مظلوم فلسطینیوں اور کشمیریوں کو نواز شریف کے اسرائیلی اور بھارتی جارحیت کے خلاف جاندار خطاب سے حوصلہ ملا ہے، عالمی برادری کو مظالم کا نوٹس لینا چاہیے۔ جامعہ ابراہیمیہ میں جمعہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ اقوام متحدہ مسئلہ کشمیر کے حل میں عملی کردار ادا کرے تو علاقائی اور عالمی امن کی ضمانت مل سکتی ہے۔ پاکستان اور بھارت کے مابین مستقل امن کے قیام کیلئے پیش کردہ چار نکاتی فارمولا یواین چارٹر کے مطابق ہے اور پرامن بقائے باہمی کے آفاقی اصول کے عین مطابق ہے ۔ اقوام متحدہ کو اس فارمولے کو قابل عمل بنانے میں بھی کردار ادا کرنا چاہیے۔ بھارت کی ہٹ دھرمی اورکشمیر پر اسکی تسلط جمائے رکھنے کی پالیسی پاکستان کی سا لمیت کو نقصان پہنچانے کے مترادف ہے ۔ جس کے ردعمل میں ایٹمی جنگ کا خطرہ بڑھ سکتاہے اس سے علاقائی اور عالمی تباہی کی نوبت آئی پھر اسکی ذمہ داری اقوام متحدہ پر عائد ہو گی ،جو مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے آج تک اپنی قراردادوں پر بھی عمل نہیں کراپایا جبکہ اقوام متحدہ کی ناکامی ہی عالمی تباہی کی بنیاد بن سکتی ہے۔

مزید : صفحہ آخر