رمادی میں ہونیوالے خودکش حملے میں ملوث خودکش بمبار اردن کی پارلیمنٹ کے ممبر میزن الڈھالین کا بیٹانکلا

رمادی میں ہونیوالے خودکش حملے میں ملوث خودکش بمبار اردن کی پارلیمنٹ کے ممبر ...
رمادی میں ہونیوالے خودکش حملے میں ملوث خودکش بمبار اردن کی پارلیمنٹ کے ممبر میزن الڈھالین کا بیٹانکلا

عمان(مانیٹرنگ ڈیسک)اگست میں عراق کے رمادی کے علاقے میں ہونیوالے خودکش حملے میں ملوث خودکش بمبار کی شناخت ہوگئی۔خودکش بمبار اردن کی پارلیمنٹ کے ممبر میزن الڈھالین کا بیٹانکلا۔اردن میڈیا کے مطابق اردن کی پارلیمنٹ کے ممبر میزن الڈھالین نے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ داعش میں شمولیت سے پہلے اسکا 23سالہ بیٹا محمد (ابو بارہ)یوکرائن کی یونیورسٹی میں میڈیکل کا طالب علم تھا ،وہ ترکی اور شام کے راستے عراق پہنچا اور داعش میں شمولیت اختیار کرلی ۔انہوں نے بتایا کہ انکے بیٹے نے انہیں اور اپنی والدہ کو بھی داعش میں شمولیت کیلئے متعدد بار کہاتھا۔مقامی ویب سائٹ سے گفتگو میں انہوں نے بتایا کہ اگست میں انہیں انکے بیٹے کا پیغام ملا جس میں اس نے لکھا تھا وہ خودکش حملے کیلئے منتخب ہو ہے اور جلد ہی اپناہدف حاصل کرلے گا۔میزن الڈھالین نے مزید بتایا کہ انہیں انکے بیٹے کی موت کی تصدیق داعش سے جڑے ایک سوشل میڈیا اکاﺅنٹ پر اسکی تصویر دیکھنے کے بعدہوگئی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...