نوا ز شریف پاکستان واپس آکر عدلیہ سے کئے وعدے پورے کرے: صدر ڈاکٹر عارف علوی

نوا ز شریف پاکستان واپس آکر عدلیہ سے کئے وعدے پورے کرے: صدر ڈاکٹر عارف علوی

  

  اسلام آباد(سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ دیسک،آئی این پی) صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ،نوازشریف نے باہر جانے کی وجہ بیماری بتائی، ان کے  واپس نہ آنے کی وجہ کیا ہے،  بتایا جائے نوازشریف نے آپریشن کس مسئلے کا کرانا ہے؟کیا وہاں بیٹھ کر قیادت کرنے سے اسکی صحت بہتر ہو جائے گی، نوازشریف عدلیہ سے کئے گئے  وعدے پورے کریں  اور  بذات خود آ کر اپنے کیسز کی پیروی کریں، سب  ملکی ادارے اکٹھے  اور کرپشن کے خلاف ہیں،نیب  کی کوشش  ہے کہ ملک میں احتساب ہو اور ہوتا رہنا چاہیے، پاکستانی خواتین میں چھاتی کے کینسر کا مرض بڑا مسئلہ بن چکا ہے۔جمعہ کو نجی ٹی وی چینل  کو انٹرویو دیتے ہوئے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ ملکی ادارے اکٹھے ہیں،سب کرپشن کے خلاف ہیں،نیب کوشش کر رہا ہے کہ ملک میں احتساب ہو اور ہوتا رہنا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ احتساب بلاتفریق ہونا چاہیے،عالمی مالیاتی قوانین کے تحت دنیا بھر میں اثاثوں کے بارے میں جواب دینا ہوتا ہے،نوازشریف نے باہر جانے کی وجہ بیماری بتائی، ان کے  واپس نہ آنے کی وجہ کیا ہے، انہیں پلیٹلیٹس کا مسئلہ تھا،بتایا جائے نوازشریف نے آپریشن کس مسئلے کا کرانا ہے؟کیا وہاں بیٹھ کر قیادت کرنے سے نوازشریف کی صحت بہتر ہو جائے گی،عدلیہ سے کئے وعدے پورے کریں، بذات خود آ کے اپنے کیسز کی پیروی کریں۔صدر ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ حکومت نوازشریف کو واپس لانے کی کوشش کر رہی ہے،اپوزیشن نے اداروں پر جیسے تنقید کی اس پر افسوس ہے، یہ پاکستان کی بدنامی کا باعث ہے،اپوزیشن کا الزام غلط ہے کہ حکومت آرڈیننس پر چل رہی ہے،نوازشریف کو قومی اداروں کو بدنام نہیں کرنا چاہیے،وعدے کے مطابق وطن واپس آکر عدالتوں کا سامنا کریں۔انہوں نے کہا کہ ملک میں جو بھی انتشار پیدا کرے گا میں اس کے خلاف ہوں، مجھے یقین ہے کہ موجودہ حکومت اپنی مدت پوری کرے گی ۔صدر مملکت نے کہا کہ ملک میں مہنگائی 14فیصد سے کم ہو کر 9فیصد پر آگئی ہے،ملک میں مہنگائی کم کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے،حکومت کی کارکردگی سے مطمئن ہوں۔انہوں نے کہا کہ کورونا وباء کے خلاف علماء  اورمیڈیا سمیت ہر ایک نے اہم کردارادا کیا ہے،دنیا بھر میں کورونا بحران کی وجہ سے بیروزگاری میں اضافہ ہوا ہے، پاکستان اب بہتری کی طرف آرہا ہے۔چھاتی کے سرطان کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ پاکستانی خواتین میں چھاتی کے کینسر کا مرض بڑا مسئلہ بن چکا ہے، بروقت تشخیص سے اس بیماری سے چھٹکارا پایا جاسکتا ہے، خواتین نوزائیدہ بچوں کو اپنا دودھ پلا کر کینسر سے محفوظ رہ سکتی ہیں۔ دریں اثناصدر عارف علوی نے بریسٹ کینسر سمیت تمام بیماریوں پر مربوط قومی ڈیٹا بیس تیار کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ ڈیٹا بیس کی تیاری سے مختلف بیماریوں کے تدارک میں مدد ملے گی۔جمعہ کو صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کی زیرِ صدارت بریسٹ کینسر پر اجلاس ہوا جس میں معاون خصوصی برائے سماجی تحفظ ڈاکٹر ثانیہ نشتر، معاون خصوصی صحت ڈاکٹر فیصل سلطان اور ایم ڈی بیت المال عون عباس بپی نے شرکت کی۔صدر ڈاکٹر عارف علوی کا بریسٹ کینسر سمیت تمام بیماریوں پر مربوط قومی ڈیٹا بیس تیار کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہاکہ پاکستان میں مختلف بیماریوں سے متعلق مرکزی ڈیٹا بیس کی کمی ہے، پاکستان میں چھاتی کے کینسر کی بیماری دوسرے جنوبی ایشیائی ممالک کی نسبت زیادہ پائی جاتی ہے۔صدر عارف علوی نے کہاکہ ڈیٹا بیس کی تیاری سے مختلف بیماریوں کے تدارک میں مدد ملے گی۔

صدر مملکت

مزید :

صفحہ اول -