صوبے کیلئے اقدامات نہ ہوئے تو دما دم مست قلندر ہوگا‘ غلام فرید کوریجہ 

صوبے کیلئے اقدامات نہ ہوئے تو دما دم مست قلندر ہوگا‘ غلام فرید کوریجہ 

  

 ملتان (سپیشل رپورٹر)سرائیکستان صوبہ محاذ کے رہنماؤں خواجہ غلام فرید کوریجہ، کرنل عبدالجبار عباسی، مہر شکیل احمد شاکر سیال،عاشق بزدار، حاجی رب نواز ملک، ظہور دھریجہ، مہر مظہر کات اور مہر شفیق سیال نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان پارلیمانی جماعتوں سے افہام و تفہیم کی فضا پیدا کر کے سرائیکی صوبے کیلئے اقدامات کریں۔انہوں نے کہا کہ نواز شریف کا عمران خان کو سلیکٹڈ کہنا اور عمران خان کا نواز شریف کو یہ طعنہ دینا کہ نواز شریف فوج کی چوسنی سے سیاستدان بنے، اس لئے(بقیہ نمبر27صفحہ 6پر)

 بے وقت راگنی ہے کہ سب ہی فوج کی آشیرباد سے حکمران بنتے آ رہے ہیں۔ سرائیکی رہنماؤ ں نے کہا کہ بلدیاتی الیکشن کے بعد قومی الیکشن کا مرحلہ ہے، اگر حکومت نے صوبے کیلئے اقدامات نہ کئے تو دمادم مست قلندر ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ سرائیکستان صوبہ محاذ کفن باندھ کر سڑکوں پر آئے گا، ہم احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ شروع کر رہے ہیں، کل 3 اکتوبر کو جھنگ کی تحصیل احمد پور سیال میں سرائیکستان نوجوان تحریک کا مظاہرہ ہے‘ 7 اکتوبر کو اسلام آباد میں خواجہ فرید کی اہلیہ محترمہ کے تعزیتی ریفرنس سے قبل سرائیکی جماعتیں صوبہ سرائیکستان کی جدوجہد کا آئندہ لائحہ عمل تیار کریں گی، اکتوبر کے آخر میں دھریجہ نگر میں سرائیکستان یکجہتی کانفرنس اور خواتین کنونشن ہوگا اور نومبر کے شروع میں ملتان میں سرائیکستان سٹوڈنٹس کنونشن کا انعقاد کیا جائے گا۔ اکتوبر اور نومبر کے مہینوں میں وسیب کے مختلف علاقوں میں دھرنے، احتجاجی ریلیاں لانگ مارچ کے دوسرے مرحلے کا پروگرام بھی ترتیب دیا جا رہا ہے اور مہرے والا میں 35 ویں سالانہ سرائیکی کانفرنس میں وسیب کی تمام جماعتیں بھرپور شرکت کریں گی اور وسیب کے لوگ اس وقت تک خاموش نہیں ہونگے جب تک صوبہ نہیں بن جائے گا۔ اس موقع پر سرائیکستان صوبہ محاذ کے رہنماؤں نے اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور میں 5 اکتوبر کو خواجہ فرید کافی نائٹ اور 6 اکتوبر کو خواجہ فرید کانفرنس کے انعقاد کا خیر مقدم کیا۔

غلام فرید

مزید :

ملتان صفحہ آخر -