ہوا ہوں اِن دنوں مائل کسی کا| سراج اورنگ آبادی |

ہوا ہوں اِن دنوں مائل کسی کا| سراج اورنگ آبادی |
ہوا ہوں اِن دنوں مائل کسی کا| سراج اورنگ آبادی |

  

ہوا ہوں اِن دنوں مائل کسی کا

نہ تھا میں اس قدر گھائل کسی کا

دیوانے دل کو سمجھاتا ہوں لیکن

کہاں لگ ہوئے کوئی حائل کسی کا

ہوا ہے دل دہی کا تم پہ تاواں

نہیں آسان لینا دل کسی کا

گلی میں جس کی شورِ کربلا ہے

سلونا شوخ ہے قاتل کسی کا

کہو اس لالۂ گلزارِ جاں کوں

کبھی تو دیکھ داغِ دل کسی کا

سراج اب سوزِ دل میرا وہ جانے

جو ہے پروانۂ محفل کسی کا

شاعر: سراج اورنگ آبادی

(کلیاتِ سراج:سالِ اشاعت؛1998)

Hua   Hun   In    Dinon   Maayal   Kisi    Ka

Na   Tha   Main   Iss   Qadar   Ghaayal   Kisi    Ka

Dewaanay   Dil   Ko   Samjhaata  Hun   Lekin

Kahan   Lagg    Huay   Koi    Haayal    Kisi    Ka

Hua   Hay    Dil    Dahi    Ka  Tum   Pe   Tawaan

Nahen    Asaan   Lena   Dil   Kisi    Ka

Gali   Men   Jiss   Ki   Shor-e-Karbalaa   Hay

Saloona   Shokh   Hay   Qaatill   Kisi   Ka

Kaho   Uss   Laala-e- Gulzaar-e-Jaan   Koon

Kabhi   To   Dekh   Daagh-e-Dil   Kisi    Ka

SIRAJ   Ab   Soz-e-Dil   Mera   Wo   Jaanay

Jo   Hay    Parwaana-e-Mehfill   Kisi    Ka

Poet:Siraj   Aurangabadi

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -