” جس جگہ یہ واقعہ ہوا وہاں میری والدہ کے دروازہ کھولنے پر پولیس اہلکاروں نے بد تمیزی کی“نہال ہاشمی کی بیٹی کا موقف بھی سامنے آگیا

” جس جگہ یہ واقعہ ہوا وہاں میری والدہ کے دروازہ کھولنے پر پولیس اہلکاروں نے ...
” جس جگہ یہ واقعہ ہوا وہاں میری والدہ کے دروازہ کھولنے پر پولیس اہلکاروں نے بد تمیزی کی“نہال ہاشمی کی بیٹی کا موقف بھی سامنے آگیا

  

 کراچی(آئی این پی ) مسلم لیگ ن کے رہنما نہال ہاشمی کی بیٹی عائشہ ہاشمی نے کہا ہے کہ پولیس اہلکاروں نے میری والدہ کے ساتھ بدتمیزی کی اور جب میرے بھائی نے مداخلت کی تو اسے پکڑلیا۔ تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن کے

رہنما نہال ہاشمی کی بیٹی عائشہ ہاشمی کا واقعے کے بعد اہم بیان سامنے آگیا، عائشہ ہاشم نے کہا ہے کہ جس جگہ یہ واقعہ ہوا وہاں پہلے سےکوئی جھگڑاچل رہاتھا، میری والدہ کے دروازہ کھولنے پر پولیس اہلکاروں نے ان سے بد تمیزی کی۔ عائشہ ہاشمی کا کہنا تھا کہ جب میرے بھائی نے مداخلت کی توپولیس اہلکاروں نے ایک بار پھر والدہ کے ساتھ بدتمیزی کی اورمیرے بھائی کو پکڑا، میں آگے بڑھی تو مجھے بھی دھکا دیا۔ اہلیہ ڈاکٹر نشاط فاطمہ نے بتایا کہ چھوٹا سا معاملہ تھا جسے بڑھا دیا گیا ، پولیس تشدد سے بازو اور کندھے پر چوٹیں آئی ہیں۔

ادھر چئیرمین سینیٹ قائمہ کمیٹی داخلہ سینیٹر رحمان ملک نے سینیٹر نہال ہاشمی کی گرفتاری کا نوٹس لیتے ہوئے آئی جی پولیس و سیکرٹری داخلہ سندھ سے رپورٹ طلب کر لی ۔سینیٹر رحمان ملک نے کہا کیا نہال ہاشمی کو لاک میں ڈالنے سے پہلے پولیس نے قانونی تقاضے پورے کئے؟ ،کیا سینیٹر نہال ہاشمی کے گرفتاری کے باقاعدہ وارنٹ جاری ہوئے تھے؟ ،کن وجوہات کی بنیاد پر سینیٹر نہال ہاشمی کو گرفتار کیا گیا، کمیٹی کو تفصیلات پیش کی جائے ،سینیٹ قائمہ کمیٹی داخلہ دیکھے گی کہ گرفتاری میں کسی قسم کی غیرقانونی عنصر تو نہیں پایا جاتاہے، کمیٹی دیکھے گی کیا نہال ہاشمی کے گرفتاری سے پہلے پولیس نے قانون قواعد و ضوابط کو مدنظر رکھے ہیں، کسی کو قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -