ہائیکورٹ نے چینی کی قیمت مقرر کرنے کیخلاف درخواستیں نمٹا دیں 

    ہائیکورٹ نے چینی کی قیمت مقرر کرنے کیخلاف درخواستیں نمٹا دیں 

  

لاہو(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ کے مسٹرجسٹس شاہد جمیل خان نے چینی کی قیمت مقرر کرنے کے خلاف درخواستوں پر تحریری فیصلہ جاری کر تے ہوئے شوگر ملوں کی جانب سے دائر درخواستیں نمٹا دیں،14صفحات پرمشتمل عدالتی فیصلے میں قراردیاگیاہے کہ معاملہ پہلے ہی اپیلیٹ کمیٹی کے روبرو زیر سماعت ہے،عدالت چینی کی قیمت مقرر کرنے کے تکینکی مسئلے میں مداخلت نہیں کرنا چاہتی، شوگر ملوں کی اپیلوں کی سماعت کے لئے مجاز فورم موجود ہے، اپیلیٹ کمیٹی چینی کی قیمت کے تعین میں صارفین کے مفاد کو بھی سامنے رکھے،اگر قیمت کے تعین میں ملوں کے تحفظات سامنے آئیں تو انھیں بھی دور کیا جائے عدالتی فیصلے میں مزید کہا گیا کہ پنجاب حکومت کو صارفین کو قطاروں میں کھڑا کرنے سے بھی روک دیا آئین کے تحت صارفین کی عزت و تکریم کو بحال کرنے کے اقدامات بھی کئے جائیں، شوگر ملز کا زائد قیمتیں وصول کرنا ثابت ہونے پر زر ضمانت رقم کا فائدہ صارفین کو دیا جائے، سپریم کورٹ نے بھی عدالتوں کے اشیاء کی قیمتوں کی نگرانی کے اقدام کو نہیں سراہا، چینی کی قیمت مقرر کرنے کے خلاف  تمام درخواستیں نمٹائی جا تی ہیں، شوگر ملوں نے حکومت کی جانب سے چینی کی قیمت مقرر کرنے کے خلاف ہائی کورٹ سے رجوع کیا تھا عدالت میں جہانگیر ترین سمیت دیگر ملز مالکان کی جانب سے درخواستیں دائر کی گئی تھیں جس میں درخواستوں گزروں کی جانب سے مارکیٹ سے زبردستی چینی اٹھنے اور حکومتی ریٹ پر چینی فروخت کرنے کے اقدام کو چیلنج کرتے ہوئے موقف اختیار کیا گیا تھاکہ حکومت زبردستی مارکیٹوں سے مقرر ریٹ پر چینی فروخت نہ کرنے کے خلاف اٹھا رہی ہے جو غیر قانونی اقدام ہے حکومت کے مقرر کردہ ریٹس پر چینی فروخت کرنا ملز کو نقصان ہوتا ہے،حکومتی اقدام کو کالعدم قرار دیاجائے اور عدالت مقرر کردہ ریٹس کو بھی غیر قانونی قرار دے۔

درخواستیں نمٹا دیں 

مزید :

صفحہ اول -