فوجی طاقت جمہوریت نہیں لا سکتی یہ کابل سے سیکھ چکے ہیں ، سربراہ خارجہ پالیسی یورپی یونین 

فوجی طاقت جمہوریت نہیں لا سکتی یہ کابل سے سیکھ چکے ہیں ، سربراہ خارجہ پالیسی ...
فوجی طاقت جمہوریت نہیں لا سکتی یہ کابل سے سیکھ چکے ہیں ، سربراہ خارجہ پالیسی یورپی یونین 

  

برسلز ( ڈیلی پاکستان آن لائن) یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کے سربراہ جوزف بوریل نےکہا کہ فوجی طاقت جمہوریت نہیں لا سکتی یہ کابل سے سیکھ چکے ہیں۔

العربیہ   کو انٹرویو  میں جوزف بوریل  کا کہنا تھا کہ یونین نے افغانستان سے ایک سبق سیکھا  کہ جمہوریت کو عسکری طور پر مسلط نہیں کیا جا سکتا، اس تجربے سے سب سےواضح سبق ملا کہ فوجی حل کوئی حل نہیں ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ افغانستان میں عالمی مشن ایک جدید ریاست کی تعمیر میں ناکام رہا، یہ جنگ 20 سال تک جاری رہی ،  یہ ابتدائی طور پر 11 ستمبر کے خونی حملوں کی وجہ سے جائز تھی جس کے خاتمے کا فیصلہ  ڈونلڈ ٹرمپ کی سربراہی میں سابق امریکی انتظامیہ نے لیا تھا۔

لیبیا کی صورت حال پر گفتگو کرتے ہوئے  بوریل نے  کہا کہ لیبیا میں سیاسی عمل کمزور ہے لیکن یہ کام کر رہا ہے اور ہمیں اس کی حمایت کرنی چاہیے۔عالمی اور یورپی برادری لیبیا کے انتخابات کے انعقاد میں درپیش مشکلات کو سمجھتی ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -