باپ کے 40 سال بعد بیٹے نے بھی طب کے شعبے میں نوبیل انعام جیت لیا

باپ کے 40 سال بعد بیٹے نے بھی طب کے شعبے میں نوبیل انعام جیت لیا
باپ کے 40 سال بعد بیٹے نے بھی طب کے شعبے میں نوبیل انعام جیت لیا

  

سٹاک ہوم (ڈیلی پاکستان آن لائن) سوانتے پابو کو پیر کے روز ان کی اس غیر معمولی دریافت پر طب میں 2022 کا نوبیل انعام دیا گیا جس نے ثابت کیا کہ جدید انسانوں کا ڈی این اے معدوم ہونے والے رشتہ داروں نینڈرتھلز اور ڈینیسووان کے ساتھ  مشابہت رکھتا ہے۔ سویڈش سائنسدان نے ہمارے مدافعتی نظام کے بارے میں اہم بصیرت فراہم کی اور  بتایا کہ انسانوں کو معدوم کزنز کے مقابلے میں کیا منفرد بناتا ہے.

 وہ سونے برگسٹروم کے بیٹے ہیں، جنہوں نے 1982 میں طب کا نوبیل انعام جیتا تھا۔ ایوارڈ کا اعلان کرتے ہوئے نوبیل کمیٹی نے کہا کہ سائنسدانوں نے موجودہ دور کے انسانوں کے معدوم ہونے والے رشتہ دار نینڈرتھل کے جینوم کو ترتیب دیا اور پہلے سے نامعلوم ہومینن، ڈینیسووا کی سنسنی خیز دریافت کی۔

مزید :

بین الاقوامی -