شام نے ممکنہ حملہ رکوانے کیلئے اقوام متحدہ سے باقاعدہ درخواست کردی

شام نے ممکنہ حملہ رکوانے کیلئے اقوام متحدہ سے باقاعدہ درخواست کردی
شام نے ممکنہ حملہ رکوانے کیلئے اقوام متحدہ سے باقاعدہ درخواست کردی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

دمشق(مانیٹرنگ ڈیسک) شام نے باضابطہ طور اقوام متحدہ سے ممکنہ جارحیت روکنے اور مسئلے کے پرامن حل کیلئے اپیل کردی ۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق اقوامِ متحدہ میں شام کے نمائندے بشارالجعفری نے ایک خط لکھا ہے جس کے مطابق شامی حکومت نے اقوامِ متحدہ کے سیکریٹری جنرل سے کہا ہے کہ وہ شام کیخلاف کسی بھی طرح کی جارحیت روکنے میں اپنی کوششیں کرے اور بحران کے پ±رامن حل کی تلاش میں مدد فراہم کرے جبکہ مارچ 2011 ءسے سرکار کیخلاف بغاوت میں اب تک 110,000 افراد مارے جاچکے ہیں۔ دوسری جانب فرانس نے کہا ہے کہ مبینہ کیمیائی حملے میں بشارالاسد حکومت ملوث ہونے کے واضح ثبوت موجود ہیں۔کیری نے این بی سی اور سی این این سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ گزشتہ ماہ دمشق میں ہونے والے کیمیائی حملے کے بعد اقوامِ متحدہ کے ایمرجنسی ورکرز کو متاثرین کے بالوں اور خون کے نمونوں سے ایک طاقتور اعصابی گیس، سیرین کے استعمال کے شواہد ملے ہیں۔ شامی حکومت ایک بار پھر یہ دہراتی ہے کہ اس نے کیمیائی ہتھیار استعمال نہیں کئے۔شام کی حکومت کے مطابق دنیا توقع رکھتی ہے کہ امریکہ امن کیلئے اپنا کردار ادا کر ے لیکن اس کیلئے جینیوا میں شام کیلئے ایک کانفرنس بلاکر سنجیدگی کا مظاہرہ کیا جائے ۔

مزید : بین الاقوامی