سیاسی مداخلت‘چھٹے ایم ڈی پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن بھی تبدیل 

سیاسی مداخلت‘چھٹے ایم ڈی پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن بھی تبدیل 

  

ملتان (سٹاف رپورٹر) سیاسی مداخلت‘نئے منیجنگ ڈائریکٹر پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن ندیم سرور بھی تبدیل‘ صوبائی وزیر تعلیم مرادراس کے 2سالہ دور میں 7(بقیہ نمبر51صفحہ 6پر)

صوبائی سیکرٹری تعلیم سکولز اور6منیجنگ ڈائریکٹرز پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن تبدیل‘ تعلیمی صورتحال بہتر کرنے کی بجائے اعلی ٰ افسران کے تبادلوں پر زور‘ تعلیمی حلقوں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی۔بتایا گیا ہے کہ صوبہ پنجاب میں شعبہ تعلیم کے معاملات و مسائل گھمبیر صورت اختیار کرچکے ہیں‘میٹرک اور انٹر میڈیٹ میں جہاں بیشتر سرکاری تعلیمی اداروں کے ناقص ترین رزلٹ سامنے آئے ہیں وہاں پرائیویٹ سیکٹر کی لوٹ مار میں بھی اضافہ ہوا ہے۔اربوں روپے تعلیم پر خرچ کرنے کے باوجود مطلوبہ نتائج حاصل نہیں ہو سکے ہیں‘300سے زائد سکولز سربراہان و اساتذہ کے خلاف ناقص کارکردگی  اور بے ضابطگیوں پر انکوائریاں التوا کا شکار ہیں جبکہ پیف سکولز کے معاملات بھی گھمبیر ہو چکے ہیں‘غیر رجسٹرڈ‘ غیر معیاری پرائیویٹ سکولز کے خلاف کارروائیاں نہیں ہوسکیں‘ ڈنگ ٹپاؤ سے کام لیاجا رہا ہے‘کھنڈر نما عمارتوں سمیت غیر معیاری پیف سکولز کی چھانٹی بھی نہیں ہو سکی‘ الٹا تمام پیف سکولز کی ادائیگیاں غیر قانونی طور پر روک کر معاملات مزید الجھا دئیے گئے‘ مختلف پیف افسران پیف سکولز کے خفیہ پارٹنر ہیں‘اس کے علاوہ سیاسی مداخلت نے پنجے گاڑے ہوئے ہیں‘صوبائی وزیر تعلیم مراد راس کے 2سالہ دور میں 7صوبائی سیکرٹری تعلیم سکولز پنجاب تبدیل کئے جاچکے ہیں‘اب سیاسی مداخلت پر چھٹے ایم ڈی پیف ندیم سرور کو بھی ہٹا دیا گیا ہے جن کی جگہ تاحال کسی نئے افسر کی تعیناتی نہیں کی گئی ہے۔تبدیل ہونے والے منیجنگ ڈائریکٹرز پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن میں عمران یعقوب‘شمیم آصف‘ ندیم سروراور دیگر شامل ہیں‘ تعلیمی حلقوں نے اس صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ صوبائی وزیر تعلیم مراد راس کے 2سالہ دور میں بڑی تعداد میں سیکرٹریز سکولز اور منیجنگ ڈائریکٹرز کو تبدیل کئے جانے سے تعلیمی صورتحال میں بہتری نہیں ہوئی ہے‘  بار باراعلی ٰ افسران تعلیم کوہٹانے سے تو بہتر ہے کہ اکیلئے صوبائی وزیر تعلیم مراد راس کو ہی ہٹا دیاجائے۔

تبدیل

مزید :

ملتان صفحہ آخر -