زکریا یونیورسٹی: کدو توڑنے پر غریب ملازمہ کی تنخواہ بند‘ پیڈا انکوائری شروع 

 زکریا یونیورسٹی: کدو توڑنے پر غریب ملازمہ کی تنخواہ بند‘ پیڈا انکوائری ...

  

ملتان(سٹاف رپورٹر)بہاالدین زکریا یونیورسٹی میں کدو توڑنے کے الزام میں غریب خاتون ملازمہ کی تنخواہ بند کرکے پیڈاایکٹ تحت انکوائری شروع کردی گئی، تفصیل کے مطابق زکریا یونیورسٹی میں اس وقت ایک کدو کا چرچا ہے جو ایک سوئیپرشہنازنے گھر میں (بقیہ نمبر37صفحہ6پر)

پکانے کیلئے توڑاتھا، جس پر ممبر سینڈیکیٹ ڈاکٹر اکبر انجم نے اسے شدید برا بھلا کہا‘ان کا غصہ ٹھنڈا نہ ہوا اور اس سوئپر کی تنخواہ بند کرادی اور اس کے خلاف پیڈاایکٹ کے تحت انکوائری بھی شروع کردی ہے جس پر کلاس فور کے ملازمین میں اشتعال پایاجاتا ہے، گزشتہ روز انہوں نے ایڈمن بلاک میں مظاہر ہ بھی کیا، جبکہ یونین کے نمائندے بھی متحرک  رہے اور اس معاملے کو لیکر شعبہ فوڈ سائنسز کے سینئر ٹیچر ڈاکٹر ریاض احمد رجسٹرار کے پاس پہنچے اور سوئیپر کو معطل کرنے اور تنخواہ بند کرنے پر افسوس ظاہر کرتے ہوئے اس کی وجوہات پوچھیں‘ان کا کہنا تھا کہ یہ سوئیپر ان کے ڈیپارٹمنٹ میں تعینات تھی‘ان کے شعبہ کو اعتماد میں لئے بغیر کیسے کارروائی کی گئی جس پر بات بڑھ گئی معاملہ دست وگریباں تک پہنچتے پہنچتے رہ گیا‘ذرائع کا کہنا ہے کہ کدو کے معاملے پر ایمپلائز یونین نے آج احتجاج کا اعلان کیا ہے‘صدر ایمپلائز یونین ملک صفدر حسین کا کہنا ہے کہ سپریم کورٹ کے احکامات کی روشنی میں کسی ملازم کی تنخواہ بند نہیں کی جاسکتی، رجسٹرار نے غیر قانونی قدم اٹھایا ہے‘اتنا بڑا ایشو نہیں تھا مگر دو بڑوں کی انا نے غریب ملازمہ پر زندگی تنگ کردی جو افسوس ناک ہے۔

انکوائری

مزید :

ملتان صفحہ آخر -