تاجروں کیلئے خصوصی ریلیف پیکیج کا اعلان کیا جائے، محمد اکرم رانا 

تاجروں کیلئے خصوصی ریلیف پیکیج کا اعلان کیا جائے، محمد اکرم رانا 

  

کراچی(اکنامک رپورٹر)برساتی پانی کے باعث بولٹن مارکیٹ، آرام باغ، فرنیچر مارکیٹ، پیپر مارکیٹ، جوڑیا بازار، اردو بازار، ٹیکسٹائل پلازہ سمیت دیگر مارکیٹوں میں تاجروں کو 25ارب سے زائد کا نقصان۔ کورونا وائرس میں لاک ڈاؤن کے باعث ہونے والے مالی خسارے سے تاحال نہ سنبھلنے والے تاجروں کو بارش میں برساتی پانی کی بروقت نکاسی نہ ہونے کے باعث دیوالیہ کردیا۔ تاجر وں کی داد رسی کیلئے کوئی اقدامات نہیں کیے گئے، مایوسی کا شکار ہیں۔اس سلسلے میں رابطہ کرنے پر ٹیکسٹائل پلازہ اونر ایسوسی ایشن کے صدر محمد اکرم رانا نے کہا کہ تاجروں کیلئے خصوصی ریلیف پیکیج کا اعلان کیا جائے۔ ایف پی سی سی آئی  اور کراچی چیمبر آف کامرس کے توسط سے تاجروں کو مالی امداد فراہم کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں ایک کمیٹی ہونی چاہئے جس میں تاجروں کے ایک نمائندے کو شامل کیا جائے۔ شہر کے معاشی حب کا کوئی پرسان حال نہیں ہے۔ ٹیکسٹائل پلازہ سمیت شہر کی اہم مارکیٹوں میں برساتی پانی کی نکاسی کیلئے تاجروں نے اپنی مدد آپ کے تحت اقدامات کیے ہیں۔ جنرل سیکرٹری انتخاب علی راؤ نے کہا کہ ٹیکسٹائل پلازہ کے تاجر برساتی پانی کی بروقت نکاسی نہ ہونے کے باعث شدید مالی خسارے کا شکار ہوگئے ہیں۔ ٹیکسٹائل پلازہ میں 5 ماہ گزرنے کے باوجود بجلی کے میٹروں کی تنصیب کا مسئلہ بھی حل نہیں کیا گیا ہے جس کا فوری نوٹس لینے کی ضرورت ہے۔ 

مزید :

صفحہ آخر -