نیب کا سہیل سیال کی رہائشگاہ پر چھاپہ، اہم دستاویز تحویل میں لے لیں 

نیب کا سہیل سیال کی رہائشگاہ پر چھاپہ، اہم دستاویز تحویل میں لے لیں 

  

لاڑکانہ (این این آئی)قومی احتساب بیورو (نیب) سکھر نے لاڑکانہ میں صوبائی وزیر سہیل انور سیال کی رہائش گاہوں پر چھاپے مارے ہیں۔نیب ذرائع کے مطابق قومی احتساب بیورو(نیب) سکھر کی ٹیم صوبائی وزیر سہیل انور سیال کی قیام گاہ پر موجود ہے۔نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ سہیل انورسیال کے گھر سے اہم دستاویزات حاصل کی گئی ہیں، صوبائی وزیر کے خلاف آمدن سے زائد اثاثہ جات کے کیس میں تحقیقات جاری ہیں۔نیب کے مطابق پہلا چھاپہ سیال ہاوس لاڑکانہ سٹی میں مارا گیا، دوسرا چھاپہ گاوں فرید آباد تحصیل باقرانی میں واقع انور پیلس میں مارا گیا، جبکہ تیسرا چھاپہ گاوں فرید آباد تحصیل باقرانی میں ہی واقع سیال پیلس میں مارا گیا۔نیب کا کہنا ہے کہ سہیل انور سیال کے قریبی ساتھی اسد کھرل کے گھر پر بھی چھاپہ مارا گیا ہے، چھاپوں کے دوران تمام رہائش گاہوں میں ایک ایک کمرے کی تلاشی لی گئی۔نیب کا مزید کہنا ہے کہ سہیل انور سیال کی تمام رہائش گاہوں سے اہم دستاویزات تحویل میں لی گئی ہیں، چھاپوں کے دوران رہائش گاہوں کی پیمائش بھی کی گئی۔نیب کا یہ بھی کہنا ہے کہ سیال ہاوس فرید آباد 4 ایکڑ رقبے پر محیط ہے، جس کا ایک حصہ سرکاری زمین پر تعمیر کیا گیا ہے۔واضح رہے کہ سہیل انور سیال کے خلاف کچھ عرصے سے تحقیقات کی جارہی تھیں۔دوسری جانب صوبائی وزیر سہیل انورسیال نے اپنے بیان میں کہاکہ آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس پر ہائیکورٹ سے ضمانت ملی ہے، یہ بے نامی جائیداد نہیں میرے والد کی ایف بی آر میں ڈکلیئرڈ جائیداد ہے۔صوبائی وزیر نے کہاکہ میرے والد کا انتقال 2018میں ہوا تھا، میرے والد زندہ نہیں ہیں،ان کی ڈکلیئرڈ پراپرٹی کوبے نامی ظاہرکیاجارہاہے، میرے پاس فی الحال کوئی تفصیل نہیں اس وقت میرپور خاص میں ہوں۔انھوں نے کہا کہ مجھے ابھی صرف اپنے گھر سے فون آیا ہے، نیب کی ٹیم کو کوئی دستاویز نہیں ملی ہیں، نیب کی ٹیم اس وقت میری رہائش گاہ پر موجود ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -