احساس ایمرجنسی پروگرام: بیوہ خواتین  امداد کیلئے دربدر‘ دفاتر میں اہلکاروں کی  بدتمیزی‘ ناروا سلوک‘ متاثرین کا شدید  احتجاج‘ فوری کارروائی کامطالبہ

 احساس ایمرجنسی پروگرام: بیوہ خواتین  امداد کیلئے دربدر‘ دفاتر میں ...

  

خان گڑھ(نمائندہ پاکستان) احساس ایمرجنسی کیش پروگرام میں مرحومین کے نام آنے والی مالی امداد بیواؤں کو نہ (بقیہ نمبر9صفحہ6پر)

مل سکی ' متاثرہ خواتین کا احتجاج‘تفصیل کے مطابق بدھ کے روز درجنوں بیوہ خواتین منظور مائی' مقصود بی بی' فیض مائی' ارشاد بیگم' اللہ وسائی' بختو بی بی' نذیراں خاتون' انور مائی سمیت دیگر نے احتجاج کرتے ہوئے میڈیا کو بتایا کہ کورونا میں وزیراعظم پاکستان کی طرف سے احساس ایمرجنسی کیش کے پروگرام کے تحت مردوخواتین کو بارہ ' بارہ ہزار روپے مالی امداد کی گئی اور گھرانے کے سربراہ کے نام درج کیے گئے مگر جب رقوم کی فراہمی کا عمل قیام میں لایا گیا تو ان کے خاوند کے نام تو آ گئے مگر وہ وفات پا چکے تھے ان کے نام آنے والی امدادی رقم بیوہ کے نام ٹرانسفر کرانے کیلئے کبھی نادرا آفس اور کبھی بینظیر آفس رجوع کرنے کا کہا گیا اور بعدازاں چئیرپرسن ڈاکٹر ثانیہ نشتر کے نام درخواستیں ارسال کرنے کی ہدایات جاری کی گئی اور یہ سلسلہ گزشتہ تین ماہ سے جاری ہے جس کی وجہ سے متاثرین شٹل کاک بن چکی ہیں مگر ان کو تاحال مالی امداد نہیں مل سکی دفاتر میں سوائے دھکے' بدتمیزی اور ناروا سلوک کے انہیں کوئی امداد نہیں دی گئی ان خواتین نے احتجاج کرتے ہوئے وفات پانے والوں کی امدادی رقم بیواؤں کو ٹرانسفر کرنے کیلئے وزیراعظم عمران خان اور متعلقہ ارباب اختیار سے مطالبہ کیا ہے۔

مطالبہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -