ڈاکٹر ماہا کا اپنی دوست کو بھیجا گیا آخری مبینہ وائس نوٹ سوشل میڈیا پر وائرل، اس میں وہ اپنے دوست جنید خان کے بارے میں کیا کہہ رہی ہیں ؟ ہنگامہ برپا ہو گیا 

ڈاکٹر ماہا کا اپنی دوست کو بھیجا گیا آخری مبینہ وائس نوٹ سوشل میڈیا پر وائرل، ...
ڈاکٹر ماہا کا اپنی دوست کو بھیجا گیا آخری مبینہ وائس نوٹ سوشل میڈیا پر وائرل، اس میں وہ اپنے دوست جنید خان کے بارے میں کیا کہہ رہی ہیں ؟ ہنگامہ برپا ہو گیا 

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن )کراچی کے علاقے ڈیفنس میں گھر کے واش میں روم میں مبینہ طور پر خود کو گولی مار کر خود کشی کرنے والی ڈاکٹر ماہا کے کیس میں نیا موڑ آ گیاہے کیونکہ ماہا کی جانب سے اپنی دوست کو بھیجا گیا آخری مبینہ وائس نوٹ سوشل میڈیا پر وائرل ہو گیاہے ۔

تفصیلات کے مطابق سوشل میڈیا پر ڈاکٹر ماہا علی کی مبینہ واٹس ایپ چیٹ اور وائس نوٹ تیزی سے وائرل ہو رہے ہیں جن میں وہ اپنے بوائے فرینڈ جنید کی جانب سے خود پر ہونے والے ظلم و جبر سے متعلق بات کر رہی ہیں۔مبینہ وائس نوٹ میں ڈاکٹر ماہا علی کو کہتے سنا جا سکتا ہے کہ’ ’وہ شدید ذہنی پریشانیوں کا شکار ہیں، جنید نے ان کی زندگی عذاب کی ہوئی ہے اور انہیں آرام اور پر سکون نیند کے لیے نیند کی گولیوں کا استعمال کرنا پڑ رہا ہے۔“

وائس نوٹ میں سنا جا سکتا ہے کہ ڈاکٹر ماہا علی اپنی دوست کو بتا رہی ہیں کہ وہ ذہنی دباو کے سبب مرگی کا شکار ہو گئی ہیں۔آل پاکستان ڈرامہ نامی فیس بک پیج کی جانب سے پوسٹ میں یہ دعویٰ کیا گیاہے کہ یہ مبینہ وائس نوٹ ڈاکٹر ماہا کی بہن کی جانب سے جاری کیا گیاہے ۔

واضح رہے کہ اس سے قبل پولیس کی جانب سے بیان سامنے آیا تھا کہ ڈاکٹر ماہا علی نے اپنے دوست جنید کے تشدد سے تنگ آکر خود کو مارا تھا۔ایس ایس پی ساوتھ شیراز نذیر کے مطابق پراسرار موت کے حوالے سے پولیس تفتیش مکمل کرلی گئی، متوفیہ ماہا علی کو پستول فراہم کرنے کے الزام میں دو ملزمان کو گرفتار کیا گیا تھا۔دوسری جانب ماہا علی کے دوست جنید کی جانب سے دیئے گئے بیان میں دعویٰ کیا تھا کہ وہ اور ڈاکٹر ماہا جلد شادی کرنے والے تھے۔

تفتیشی ذرائع کے مطابق ڈاکٹر ماہا کے قریبی دوست جنید کا بیان لیا گیا تھا جس میں ان کا کہنا تھا کہ مرحومہ ماہا علی شاہ سے میرے روابط 4 سال سے تھے، ہم جلد ہی شادی کرنے والے تھے۔بعد ازاں ڈاکٹر ماہا کے والد کی جانب سے اس بات کی تردید کرتے ہوئے کہا گیا تھا کہ جنید اور ماہا کی شادی کی خبریں بے بنیاد ہیں، جنید میری بیٹی کو دھمکاتا تھا۔ ڈاکٹر ماہا کے والد آصف علی شاہ کا اپنے ویڈیو بیان میں کہنا تھا کہ مجھے میری چھوٹی بیٹی نے ماہا کی خودکشی کے بعد معاملات سے آگاہ کیا۔

مبینہ وائس نوٹ:

مزید :

قومی -