دل سے اب رسم و راہ کی جائے

دل سے اب رسم و راہ کی جائے
دل سے اب رسم و راہ کی جائے

  

دل سے اب رسم و راہ کی جائے

لب سے کم ہی نباہ کی جائے

گفتگو میں ضرر ہے معنی کا

گفتگو گاہ گاہ کی جائے

ایک ہی تو ہوس رہی ہے ہمیں

اپنی حالت تباہ کی جائے

ہوس انگیز ہوں بدن جن کے

اُن میں سب سے نباہ کی جائے

اپنے دل کی پناہ میں آ کر

زندگی بے پناہ کی جائے

شاعر: جون ایلیا

Dil Say Ab rasm  o  Raah Ki jaaey

bLab Say Kam Hi Nibaah Ki Jaaey

Guftagu Be Zarar BeMaani

Guftagu gaah Gaah Ki Jaaey

Aik Hi To HawaS rahi hay hamen

Apni Haalat Tabaah Ki Jaaey

Hawas Angaiz Hon Badan Jin K

Un Men Sab Say Nibaah Ki Jaaey

Apnay Dil Ki Panaah Men Aa Kar

Zindagi Be Panaah Ki Jaaey

Poet: Jaun Elia

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -