عاصم سلیم باجوہ کےمتعلق کھربوں کی باتیں ہورہی ہیں لیکن۔۔۔حافظ حسین احمد نے ایسی بات کہہ دی کہ ہر کوئی سوچ میں پڑ جائے گا

عاصم سلیم باجوہ کےمتعلق کھربوں کی باتیں ہورہی ہیں لیکن۔۔۔حافظ حسین احمد نے ...
عاصم سلیم باجوہ کےمتعلق کھربوں کی باتیں ہورہی ہیں لیکن۔۔۔حافظ حسین احمد نے ایسی بات کہہ دی کہ ہر کوئی سوچ میں پڑ جائے گا

  

کوئٹہ(ڈیلی پاکستان آن لائن)جمعیت علماءاسلام ف کےمرکزی رہنماحافظ حسین احمد نےکہاہےکہ بلوچستان کی ترقی کے لیے کھربوں روپے کے فنڈزآئےلیکن وہ کرپشن کی نذر ہوگئے،ٹینکیوں سےاربوں روپےبرآمدہوئےلیکن احتساب کےحوالےسےکوئی بات آگےنہیں بڑھ سکی، عاصم سلیم باجوہ کےمتعلق کھربوں کی باتیں ہورہی ہیں لیکن نہ اسکی کوئی تردید سامنےآرہی اورنہ ہی ابتک کوئی تحقیقات کےحوالےسےپیش رفت ہو رہی ہے۔

 میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حافظ حسین احمد کا کہنا تھا کہ عاصم سلیم باجوہ اب وزیر اعظم کے معاون خصوصی اور سی پیک کے سربراہ ہیں ،اس لیے ضروری ہے کہ عاصم سلیم باجوہ پر جو الزامات ہیں ان کی تردید کی جائے یا تحقیقات کی جائے تاکہ اصل حقائق سامنے آسکیں۔انہوں نے کہا کہ  کہا جارہا ہے کہ عاصم سلیم باجوہ پر الزامات بین الاقوامی سازش کا حصہ ہے، اگر یہ بین الاقوامی سازش ہے تو اسے بے نقاب کیا جائے تاکہ معلوم ہوسکے کہ اصل حقائق کیا ہیں؟ ماضی کے تجربات کی روشنی میں دیکھا گیا ہے کہ جنرل پرویز مشرف اور دیگر ریٹائرڈ لوگ احتسابی ڈنڈے کی دسترس سے باہر رہے ہیں اور عدالتی شکنجے سے بھی ان کو بچایا گیا ہے۔

حافظ حسین احمد نے  کہا کہ آغاز حقوق بلوچستان پیکج سے لیکر آج تک جو کھربوں روپے بلوچستان میں آئے وہ یا تو کرپشن کی نذرہوئے ہیں یا پھر لیپس ہوکر واپس چلے گئے، اس لیے ضروری ہے کہ کرپشن کے متعلق جو باتیں سامنے آرہی ہیں ان کی تحقیقات کی جائے تاکہ دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوسکے،نیب کا ادارہ ان تمام معاملات میں خاموش ہے اور یوں معلوم ہورہا ہے کہ نیب ایک مخصوص دائرے میں ہی فعال ہے۔

مزید :

علاقائی -بلوچستان -کوئٹہ -