مسلمان ممالک کے اندر انتشار پیدا کرنا عالمی سازش کا حصہ،مقدسات کی توہین کرنے والے مسلمانوں کے دشمن ہیں: علامہ طاہر اشرفی

مسلمان ممالک کے اندر انتشار پیدا کرنا عالمی سازش کا حصہ،مقدسات کی توہین کرنے ...
مسلمان ممالک کے اندر انتشار پیدا کرنا عالمی سازش کا حصہ،مقدسات کی توہین کرنے والے مسلمانوں کے دشمن ہیں: علامہ طاہر اشرفی

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)تمام مکاتب فکر کے علماء ومشائخ نے کل(جمعہ کو)یوم عظمت رسول ﷺاہلبیت ؓواصحاب ؓ جبکہ6ستمبر یوم دفاع کو "یوم وحدت امت واستحکام پاکستان" منانے کا اعلان کرتے ہوئے کہاہے کہ مسلمان ممالک کے اندر انتشار پیدا کرنا عالمی سازش کا حصہ ہے، ہمیں ہوشیار رہنا ہوگا ،وزیر اعظم ,آرمی چیف اورسیکیورٹی اداروں کے شکرگذار ہیں جنہوں نے بروقت کارروائیوں کا آغاز کرکے انتشار کا دروازہ بند کردیا ،امید ہے کہ وہ شر پھیلانے والوں کے سرپرست بھی قانون کے شکنجے میں آئیں گے۔ انہوں نے کہاکہ تمام مکاتب فکر کے مقدسات کی توہین کرنے والے مسلمانوں کے دشمن ہیں، تمام مکاتب فکر کے علماء و مشائخ ان سے اعلان برات کرتے ہیں جلدہی اسلام آباد میں وحدت امت کانفرنس منعقد کی جائے گی۔

ان خیالات کا اظہار لاہور پریس کلب میں تحفظ ختم نبوت سیمیناروپریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے متحدہ علماء بورڈ کے صدروپاکستان علماء کونسل کے چیئرمین حافظ طاہر محمود اشرفی،مولانا سیدضیاء اللہ شاہ بخاری،مولانا رفیق جامی ،مولانا اسد زکریا ،مفتی سعید ارشد،علامہ زبیر عابد،مولانا ایوب صفدر،مولانا اسداللہ فاروق،مولانا اسید الرحمن ،مولانا اشفاق پتافی،علامہ یونس حسن ،مولانا اسلم صدیقی،علامہ طاہر الحسن،مولانا عبید اللہ گرمانی،حافظ عمار بلوچ، مولانا عبد القیوم فاروقی ، مولانا زاہد فاروقی ، مولانا عثمان بیگ فاروقی ، مولانا یاسر علوی ، مولانا نعیم بادشاہ ، مولانا شمس الحق ، مولانا اسلم قادری سمیت دیگر قائدین نے کیا، رہنماؤں نے کہاکہ مسلمانوں کی وحدت اللہ کی توحید ،حرمین شریفین کے تقدس، اہلبیت واصحاب ؓ کے احترام ،عقیدہ ختم نبوتﷺ کے تحفظ میں ہے، دین اسلام کسی بھی غیر مسلم کو زبردستی مسلمان کرنے کاقائل نہیں ہے،اہل بیتؓ اور اصحاب رسول ﷺکو زبردستی نہیں منوانا چاہتے، اگر کوئی اہل بیتؓ واصحاب رسول ؓ کو نہیں مانتا وہ نہ مانے لیکن کسی کو اصحاب رسولؐ و اہل بیتؓ کی توہین کی اجازت نہیں دیں گے ،اہلبیت ؓ اوراصحاب رسول ؓ ہمارے سروں کا تاج ہیں، متحدہ علماء بورڈ اسوقت متحرک ہے، جہاں توہین اور تکفیر کا راستہ روکنے کیلئے سفارشات کی جارہی ہیں، اب پی ٹی اے اورپیمرا کی ذمہ داری بنتی ہے کہ سوشل میڈیا میں جاری کمپین کی روک تھام کیلئے بڑے پیمانے پر ایکشن لیاجائے۔

انہوں نے کہاکہ پیغام پاکستان تمام مکاتب فکر کی مشترکہ دستاویز ہے ملی یکجہتی کونسل ،متحدہ علماء بورڈ کا مشترکہ ضابطہ اخلاق اورپیغام پاکستان کی روشنی میں قانون سازی کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہاکہ سویڈن ،ناروے میں قرآن پاک جلانے اور فرانس کے میگزین میں دوبارہ توہین آمیز خاکے شائع کئے جارہے ہیں، یہ عالمی سازش کا حصہ ہے تاکہ مسلمان ممالک کے اندر انتشار پیدا کیاجائے لیکن ہمارا پیغام ہے کہ ہمیں ہوشیار رہنا ہوگا ،اسوقت ہمارا ہمسایہ ملک بھارت سے جعلی پوسٹیں سوشل میڈیا کے ذریعے پھیلائی جارہی ہیں تاکہ پاکستان کے اندر فساد کو برپا کیاجائے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کی کوششوں سے افغانستان میں امن قائم ہورہاہے ،وہاں بھارت کا عمل دخل ختم ہوچکاہے جو بھارت کیلئے قبول نہیں ہے۔

دینی رہنماؤں نے اعلان کیاکہ کل (جمعہ)یوم عظمت رسول ﷺاہلبیت ؓواصحاب ؓمنایاجائے گاجس میں علماء ،خطباء ذاکرین واعظین عوام الناس کو عظمت اہل بیت ؓ و اصحاب رسول ﷺ بیان کریں گے،استحکام پاکستان کے خلاف ہونے والی سازشوں سےعوام الناس کو آگاہ کریں گے جبکہ  6ستمبر یوم دفاع کو یوم وحدت واستحکام پاکستان کے طور پرمنایاجائیگا،اسی طرح جلدہی اسلام آباد میں وحدت امت کانفرنس منعقد کی جائے گی، جسکا مقصد یہ ہوگا کہ اپنا مسلک چھوڑو نہیں اوردوسروں کے مسلک کو چھیڑو نہیں۔

حافظ طاہر محمود اشرفی نے وزیر اعظم ،آرمی چیف اورسیکورٹی اداروں کے کردار کو قابل ستائش قراردیتے ہوئے کہاکہ ہمارے اداروں نے بروقت کارروائیوں کا آغاز کرکے انتشار کا دروازہ بند کردیا ہے، جس پر تمام مکاتب فکر کے علماء و مشائخ اور ملک کے مقتدر اداروں کے مشکور ہیں۔ایک سوال کے جواب میں حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے کہا کہ پاکستان فلسطینیوں کے ساتھ ہے جو حل فلسطینیوں کو قبول ہو گا وہی پاکستان کو قبول ہو گا۔انہوں نے کہا کہ سعودی عرب ، بحرین ، کویت اور دیگر عرب اسلامی ممالک نے واضح کر دیا ہے کہ فلسطینی ریاست کے قیام کے بغیر اسرائیل کو تسلیم نہیں کیا جا سکتا،فلسطین کے مسئلے پر امت مسلمہ کی قیادت سعودی عرب کر رہا ہے اور سعودی عرب کا فلسطین کے مسئلے پر تاریخی مؤقف ہی امت مسلمہ کا مؤقف ہے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -