عاصم باجوہ نے وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے اطلاعات کے عہدے سے استعفیٰ دینے کا فیصلہ کرلیا

عاصم باجوہ نے وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے اطلاعات کے عہدے سے استعفیٰ دینے ...
عاصم باجوہ نے وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے اطلاعات کے عہدے سے استعفیٰ دینے کا فیصلہ کرلیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)چیئر مین سی پیک اتھارٹی عاصم سلیم باجوہ نے بطور وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے اطلاعات کے عہدے سے استعفی دینے کا فیصلہ کرلیا۔ انہوں نے واضح کیا ہے کہ ان کے پاس ہر چیز کا 100 فیصد دستاویزی ریکارڈ موجود ہے۔

نجی نیوز چینل دنیا نیوز کے مطابق انہوں نے کہا ہےکہ معاون خصوصی اطلاعات کےعہدےسےمستعفی ہونےکافیصلہ کیاہے،جلدوزیراعظم عمران خان کواستعفیٰ پیش کروں گا۔ان کا کہنا تھا کہ  چیئرمین سی پیک اتھارٹی کےعہدےپرکام کرتارہوں گا، سی پیک منصوبےپرپوری توجہ دیناچاہتاہوں۔

نجی ٹی وی جیو نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے لیفٹیننٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ نے کہا کہ کمپنیوں میں جس کا جتنا شیئر تھا اسی حساب سے منافع ملا ہوگا۔ کچھ پرافٹ آئے لیکن زیادہ تر پیسے بینک کے قرض کی ادائیگی میں گئے ہیں، 70 میں سے 60 ملین ڈالر بینک کا قرضہ تھا جس سے اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ بینک کو کتنا حصہ جاتا رہا ہوگا۔

اینکر پرسن شاہزیب خانزادہ نے ان سے سوال پوچھا کہ اگر آپ  کی اہلیہ نے یکم جون کو  پیسے بزنس سے نکال لیے تو وہ پیسے کہاں گئے، کیا وہ پاکستان آئے؟

اس سوال کے جواب میں لیفٹیننٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ نے کہا کہ کون سے پیسے کہاں سے کدھر گئے، ہر چیز 100 فیصد ڈاکیومنٹڈ ہے، "میرے پاس سارا ریکارڈ موجود ہے، میں نے 4 سے 5 دن لیے ہیں ، میں نے بڑی تسلی کی ، میں نے امریکہ سے تمام دستاویزات منگوائیں، بھائیوں سے تفصیلات لیں اور ساری چیزوں کو سمجھا اور انہیں اپنے ٹیکس ایڈوائزر کو دکھایا۔"

واضح رہےکہ اس سے قبل  لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ عاصم سلیم باجوہ نے صحافی احمد نورانی کی خبر کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ احمد نورانی نے 27 اگست کو نامعلوم ویب سائٹ پر میرے بارےمیں خبر بریک کی، احمد نورانی کی خبر کی سختی سے تردید کرتا ہوں اور غلط قرار دیتا ہوں‘۔ اللہ کا شکر ہے میرے اور اہلخانہ کیخلاف الزامات کی کوشش بے نقاب ہو گئی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ہمیشہ عزت اور وقار کے ساتھ ملک کی خدمت کرتا رہوں گا۔

مزید :

Breaking News -اہم خبریں -قومی -