عمران خان اور آئی ایم ایف معاہدے کے باعث ملک مشکلات کا شکار ہے: خرم دستگیر

  عمران خان اور آئی ایم ایف معاہدے کے باعث ملک مشکلات کا شکار ہے: خرم دستگیر

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


      گوجرانوالہ(این این آئی)وفاقی وزیر توانائی خرم دستگیر نے کہا ہے وزیر اعظم کے اعلان کے مطابق بجلی کے 300یونٹ تک والے صارفین پر فیول ایڈجسٹمنٹ چارج لاگو نہیں ہوگا جس سے2کروڑ 23لاکھ صارفین کو ریلیف ملے گا، بلوچستان،سندھ اور خیبر پختونخوا کے سیلاب سے متاثرہ زیادہ تر علاقوں میں بجلی بحال ہو گئی ہے،ہم نے چھ سال قبل آئی ایم ایف کو خیر باد کہہ دیا تھا، عمران خان کے 2019ء میں آئی ایم ایف کیساتھ کئے گئے معاہدے کے باعث آج ملک مشکلات کا شکار ہے۔وفاقی وزیر خرم دستگیر نے یہ بات جمعہ کو گوجر ا نو الہ میں گیپکو ہیڈ کواٹر میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہاکہ نواز شریف کی ہدایت پر شہباز شریف نے سیلاب زدہ علاقوں میں غریب کی جھونپڑیوں میں جاکر ان کے سر پر ہاتھ رکھا کیونکہ ہم جانتے ہیں یہ وقت سیاست کا نہیں، متاثرہ عوام کی فلاح کا ہے لیکن عمران خان فتنہ فساد جاری رکھے ہوئے ہے۔ وزیراعظم کی ہدایت پر پچھلے 9دن خیبر پختونخوا اور سندھ میں گزارے تاکہ سیلاب زدگان علاقوں میں بجلی جلد بحال کی جائے۔ ہمارے افسران اور عملہ نے بہترین کام کیا جس کے نتیجہ میں بلوچستان،سندھ اور خیبر پختو نخو ا کے زیادہ تر علاقوں میں بجلی بحال ہو گئی ہے جبکہ سوات اور باجوڑ میں کھمبے گرنے کے باعث وہاں پر بجلی کی مکمل بحالی نہیں ہوسکی۔ بجلی بحال کرنے میں بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں نے بہت تعاون کیا،گیپکو کے ملازمین اور افسران نے اپنی ایک ماہ کی تنخواہ سیلاب زدگان کیلئے عطیہ کی ہے۔ یہ رقم جلد سیلاب اکاؤنٹ میں جمع کروا دی جائیگی۔ وزیراعظم شہباز شریف نے اعلان کیا ہے کہ 300یونٹ تک والے صارفین پر فیول ایڈجسٹمنٹ چارج لاگو نہیں ہوگا جس سے 3کروڑ 30لاکھ صارفین میں سے 2کروڑ 23لاکھ صارفین کو ریلیف دیا گیا ہے جو ملک کے 74فیصد صارفین کیلئے ریلیف ہے۔سیلاب سے متاثرہ فیکٹریوں کو ٹیکسز میں ریلیف دینے کیلئے وزیر خزانہ تاجروں سے مشاورت کر رہے ہیں۔ سیلاب کی وجہ سے سبزیوں کی قیمت میں اضافہ بھی ہمارے علم میں ہے جس کو کنٹرول کرنے کی بھرپور کوشش کررہے ہیں۔
خرم دستگیر

مزید :

صفحہ اول -