نیسلے پاکستان، نسٹ کا پانی کے بچاؤکیلئے کام جاری رکھنے کا عہد

  نیسلے پاکستان، نسٹ کا پانی کے بچاؤکیلئے کام جاری رکھنے کا عہد

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


اسلام آباد (پ ر)نیسلے پاکستان اور نیشنل یونیورسٹی آف سائنسز اینڈ ٹیکنالوجی (نسٹ) نے ورلڈ واٹر ویک 2022کے موقع پر پینل ڈسکشن میں پانی کے تحفظ کے چیمپئن کے طور پر اپنا کردار جاری رکھنے کا عزم ظاہر کیاہے۔ڈسکشن میں رواں سال کے موضوع ”'Seeing the Unseen: The Value of Water' کے مطابق پانی کے بچاؤ اور پیداوار میں اضافہ کیلئے ٹیکنالوجی پر مبنیآبپاشی طریقوں کے استعمال کی ضرورت پر توجہ مرکوز کی گئی۔اپنے افتتاحی کلمات میں، ایئر وائس مارشل ڈاکٹر رضوان ریاز، پرو ریکٹر آر آئی سی۔ نسٹ نے زراعت میں آبپاشی کو جدید ٹیکنالوجی کے استعمال پر زور دیتے ہوئے اس بات کا اجاگر کیا کہ پاکستان کے مخصوص زرعی مسائل کے حل کیلئے موزوں طریقوں پر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ مسائل کے حل کیلئے انڈسٹری اور اکیڈمیا کے درمیان اشتراک زرعی پیداوار کو بہتر کرنے کیلئے ضروری ہے۔ڈاکٹر عابد قیوم سلہری، ایگزیکٹو ڈائریکٹر، سسٹین ایبل ڈویلپمنٹ پالیسی انسٹی ٹیوٹ (ایس ڈی پی آئی) نے  اس بات پر زور دیا کہ پانی کے بچاؤ کو  عملی اقدامات اور پالیسی میں بنیادی اہمیت دی جانی چاہئے۔انہوں نے کہا کہ پانی کے بچاؤ کیلئے کمیونٹیز، کمپنیوں اور حکومتوں کو جدیدحل کے ساتھ آگے آنا چاہئے  تاکہ  لوگوں اور قدرت کے درمیان توازن برقرار رکھنے میں مدد ملے سکے۔فلورنس رول، کنٹری نمائندہ، یو این فوڈ اینڈ ایگری کلچر آرگنائزیشن نے پاکستان میں کسانوں کی پیداواری صلاحیتوں کوبہتر بنانے کیلئے زرعی ٹیکنالوجی سے متعلق پالیسیوں کی تشکیل اور نفاذ پر زور دیا۔ گفتگو کے دوران انہوں نے کہا ”ریسورس گورننس میکنزم تشکیل دینے سے  پانی اور زمین جیسے نایاب وسائل  کے منصفانہ استعمال میں مدد مل سکتی ہے۔ 

مزید :

کامرس -