آئی ایم ایف کے ساتھ ڈیل کو سبوتاژ کرنے کی سوچ عمران کی تھی: محمد زبیر

  آئی ایم ایف کے ساتھ ڈیل کو سبوتاژ کرنے کی سوچ عمران کی تھی: محمد زبیر

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


    کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاکستان مسلم لیگ (ن)کے رہنما اورسابق گورنر سندھ محمد زبیر نے کہا ہے کہ عمرا ن خان کو حکومت میں واپس آنے کے لیے ملک کو سبوتاژ کرکے نہیں الیکشن جیت کر آنا ہوگا یہ وقت جلسے کرنے کا نہیں بلکہ سیلاب متاثرین کی بحالی کاہے۔آئی ایم ایف کے ساتھ ڈیل کو سبوتاژ کرنے کی سوچ شوکت ترین نہیں عمران خان کی تھی۔وہ جمعہ کو کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔انہوں نے کہا کہ  آڈیو لیکس پر بہت بہت افسوس ہوا۔ ایسی گفتگو قابل معافی نہیں ہے۔ شوکت ترین کی جگہ اگر کوئی اور ہوتا تو شاید اتنا شور نہ ہوتا۔ اگر معاہدہ نہ ہوتا تو اس کے اثرات کا بم ملک کے بائیس کروڑ افراد پر گرنا تھا۔افسوس اس بات کا ہے کہ شوکت ترین آئی ایم ایف کے ساتھ  معاہدے کو سبوتاز کرنے کی کوش کرہے تھے۔ اس معاہدے کی اہمیت کا اندازہ شوکت ترین کو تھا۔ معاہدے کو سبوتازژکرنا پاکستان کے مفاد میں نہیں تھا۔یہ سوچ عمران خان کی ہے۔ ایک پروفیشنل معاشی ماہر سے ایسی گفتگو کی توقع نہیں تھی۔ حکومت میں آنے کے راستے واضح ہیں۔عمران خان انتخابات کا انتظار کریں۔توہین عدالت کیس میں نہال ہاشمی کو نا اہل نہیں کیا بلکہ جیل بھی بھیجا گیا۔نہال ہاشمی کے ساتھ تو کوئی نرمی نہیں برتی گئی۔ نہال ہاشمی نے بئت قربانیاں دی ہیں۔8 ستمبر کو نہال ہاشمی اور طلال چودھری اسلام آباد ہائی کورٹ جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ ہم انصاف چاہتے ہیں۔ایسا نہیں ہوسکتا کہ عمران خان اور دوسرے لوگوں کے لیے الگ قانون ہو۔کیا عمران خان کہیں گے ملک میں دونہیں ایک قانون ہونا چاہیے۔ہمارے خلاف فیصلوں پر خوش ہونے والے آج کیوں خاموش ہیں۔ فیصلے کا معیار سب کے لیے برابر ہونا چاہئے۔ صرف مشہور ہونے کے پیمانے پر قانون تبدیل نہیں ہونا چاہئے۔ اگر عمران خان کو سزا نہیں ہوئی تو پھر عدالت کہے کہ مسلم لیگ نون کے رہنماں کو غلط سزائیں ہوئیں۔پی ٹی آئی میں اسلام آباد آنے کی ہمت نہیں ہے۔محمد زبیر نے کہا کہ حکومت متاثرین کی مدد کے لیے اپنی ساری توجہ ریلیف اینڈ ریسکیو پر مرکوز کئے ہوئے ہے۔عمران خان بھی جلسوں میں حکومت پر حملے کرنے کے بجائے حکومت کا ساتھ دیں  اورسیلاب متاثرین کی مدد کریں۔ جب تک عمران خان رسیدیں نہیں دکھا دیتے تب تک پانچ ارب جمع کرنے کے دعوے پر یقین نہیں آئے گا۔ وزیر اعظم شہباز شریف ہر صوبے میں متاثرین کے لیے گئے ہیں۔