گوگل انسانوں کو کس طرح دھوکہ دے کر خوش کر رہاہے؟تحقیق میں دلچسپ انکشاف

گوگل انسانوں کو کس طرح دھوکہ دے کر خوش کر رہاہے؟تحقیق میں دلچسپ انکشاف
گوگل انسانوں کو کس طرح دھوکہ دے کر خوش کر رہاہے؟تحقیق میں دلچسپ انکشاف

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

سان فرانسسکو(نیوزڈیسک)گوگل نے ایک ایسی نسل پیدا کردی ہے جو اتنی ہوشیار اور ذہین نہیں ہے جتنا کہ وہ خود کو سمجھنے لگی ہے۔حال ہی میں ہونے والی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ گوگل اور دیگر سرچ انجنز کی وجہ سے وہ باتیں اور ہمارا وہ علم کافی متاثر ہوتا ہے جن کے بارے میں ہم سمجھتے ہیں کہ وہ بالکل ٹھیک ہے۔

مزید پڑھیں:فیس بک کے شوقین افراد کو سائنسدانوں نے زبردست خوشخبری سنا دی

تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ لوگوں کا علم کم ہوتا ہے لیکن گوگل کی وجہ سے مختلف چیزوں کے بارے میں جان لیتے ہیں اور خود کو بہت زیادہ عالم فاضل اور ذہین ثابت کرنے کی کوشش کرتے ہیں جبکہ حقیقت میں وہ اس درجے کے ذہین نہیں ہوتے۔دوسرے الفاظ میں گوگل لوگوں کو بے وقوف بنا رہا ہے اور لوگوں کا اپنے بارے میں یہ تاثر پیدا ہوتا ہے کہ انہیں سب علم ہے۔

تحقیق میں نو تجربات کیے گئے اور 152سے 302افراد سے مختلف آن لائن سوالات پوچھے گئے۔ایک گروہ کو انٹرنیٹ کی سہولت دی گئی اور پہلے تجربے میں اس گروپ کو ایک عنوان دیا گیا اور اسے کہا گیا کہ وہ اس عنوان کے لئے بہترین ویب سائیٹ کا بتائے۔ ایک دوسرے گروپ کی جانب سے دی جانے والی ویب سائیٹ میں سے مواد دیا گیا۔پھر ان سے ایک ہی عنوان پر مختلف طرح کے سوالات پوچھے گئے اور یہ چیز دیکھنے میں آئی کہ انٹرنیٹ سرچز والا گروپ بلا وجہ اپنے آپ کو زیادہ علم والا سمجھ رہا تھا۔انٹر نیٹ گروپ کے افراد کے پاس سوالات کے مکمل جوابات بھی نہ تھے لیکن پھر بھی وہ اپنے آپ کو زیادہ علم والا سمجھنے لگے۔

مزید پڑھیں:دیر سے آنے پر اس گاؤں میں باراتیوں کے ساتھ کیا سلوک کیا جاتاہے؟جان کر آپ بھی ہنسنے پر مجبور ہو جائیں گے

تحقیق کار فرانک کیل کا کہنا ہے کہ لوگ انٹرنیٹ پر سرچ کرنے کے بعد اپنے آپ کو بہت عالم فاضل سمجھنے لگتے ہیں حالانکہ انہیں کافی چیزوں کا علم بھی نہیں ہوتالیکن پھر بھی انٹرنیٹ کی وجہ سے وہ ایسا محسوس کرتے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس