دنیاکا خطرناک ترین ہوٹل لیکن پھر بھی،گاہکوں کی لمبی قطاریں

دنیاکا خطرناک ترین ہوٹل لیکن پھر بھی،گاہکوں کی لمبی قطاریں
دنیاکا خطرناک ترین ہوٹل لیکن پھر بھی،گاہکوں کی لمبی قطاریں

  

لندن (نیوز ڈیسک) برطانیہ میں شمالی ویلز کے پہاڑوں میں ایک بیڈ پر مشتمل دنیا کا خطرناک ترین ہوٹل قائم کیا گیا ہے جہاں صرف ایک رات گزارنے کے لئے گاہکوں کی قطاریں لگ گئی ہیں۔

یہ منفرد ہوٹل ایک جھولتے ہوئے بیڈ اور کچھ دیگر سہولیات پر مشتمل ہے جسے ہولی آئی لینڈ کے علاقے میں ایک پہاڑ کے ساتھ 200 فٹ کی بلندی پر لٹکایا گیا ہے۔ جھولتے ہوئے بیڈ کے سامنے وسیع سمندر ہے اور نیچے سینکڑوں فٹ کی گہرائی۔ اس پر زیادہ سے زیادہ دو افراد قیام کرسکتے ہیں جنہیں جھولتے بیڈ تک پہنچنے کے لئے شام کے وقت سفرکا آغاز کرنا پڑتا ہے۔ بیڈ کو مضبوط رسیوں سے باندھ کر پہاڑ سے لٹکایا گیا ہے اور اس کے ساتھ گرما گرم کھانا فراہم کرنے کے لئے کوکنگ سٹوو بھی فراہم کیا گیا ہے۔

مزیدپڑھیں:یہ نوجوان چینی فوج کیلئے تربیت حاصل نہیں کر رہے بلکہ حقیقت جان کر آپ ہنسی روکنا مشکل ہو جائے گا

 جھولتا ہوٹل قائم کرنے والے ادارے Gaia Adventures کا کہنا ہے کہ یہاں آنے والے گاہک شروع میں بہت گھبرائے ہوتے ہیں لیکن عموماً چند منٹ میں ہی نہایت پرسکون اور خوش ہوجاتے ہیں۔ یہاں ایک رات کے لئے ایک شخص کے قیام کا خرچ 450 برطانوی پاﺅنڈ جبکہ جوڑے کے قیام کا خرچ 500 برطانوی پاﺅنڈ (تقریباً 75000 پاکستانی روپے) ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس