صنعتوں کیلئے لوڈشیڈنگ کا دورانیہ کم کرنے کی کوشش کرینگے‘چیف آئیسکو

صنعتوں کیلئے لوڈشیڈنگ کا دورانیہ کم کرنے کی کوشش کرینگے‘چیف آئیسکو

 اسلام آباد (کامرس ڈیسک) اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے ایک وفد نے چیمبر کے صدر مزمل حسین صابری کی قیادت میں آئیسکو ہیڈکوارٹرکا دورہ کیا اور آئیسکو کے چیف ایگزیکٹو ملک یوسف اعوان کو صنعتوں کیلئے بجلی کی لوڈشیڈنگ میں اضافے سے پیدا ہونے والے مسائل سے آگاہ کیا۔ وفد میں اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سینئر نائب صدر محمد شکیل منیر اور نائب صدر محمد اشفاق حسین چٹھہ کے علاوہ خالد جاوید، طارق صادق، میاں شوکت مسعود، جاوید اقبال، شیخ عابد وحید اور افتخار انور سیٹھی سمیت متعدد صنعتکار شامل تھے۔وفد سے خطاب کرتے ہوئے آئیسکو کے چیف ایگزیکٹو ملک یوسف اعوان نے کہا بجلی کی لوڈشیڈنگ کی وجہ سے صنعتکاروں کو درپیش مشکلات کا انہیں بخوبی احساس ہے اور آئیسکو صنعتوں کیلئے بجلی کی لوڈشیڈنگ کو کم سے کم کرنے کیلئے تمام آپشنز پر غور کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بجلی کی قلت میں اضافے کی وجہ سے آئیسکو صنعتوں کیلئے روزانہ 4گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کرنے پر مجبور ہے تاہم انہوں نے کہا کہ صنعتوں کیلئے اب ایک وقت میں 2گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کی جائے گی ۔ تا کہ صنعتوں کو پیداواری سرگرمیاں جاری رکھنے میں کچھ ریلیف ملے۔ انہوں نے کہا کہ صنعتکار معیشت کی ترقی میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں اور آئیسکو صنعتوں کو زیادہ سے زیادہ بجلی فراہم کرنا چاہتی ہے تاہم توانائی کی بڑھتی کی قلت کی وجہ سے محکمہ لوڈمینجمنٹ کرنے پر مجبور ہے۔ انہوں نے یقین دہانی کرائی کہ صنعتکاروں کی مشاورت سے لوڈشیڈنگ کے اوقات کار کو طے کیا جائے گا تا کہ صنعتوں کو زیادہ سے زیادہ سہولت فراہم کی جا سکے۔اس موقع پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر مزمل حسین صابری نے کہا کہ مقامی صنعتیں کاروباری سرگرمیوں اور برآمدات کو فروغ دینے میں کلیدی کردار ادا کر رہی ہیں اور ہزاروں افراد کو روزگار فراہم کئے ہوئے ہیں لیکن بجلی کی لوڈشیڈنگ میں اضافے نے نہ صرف ان کی پیداواری سرگرمیوں کو متاثر کیا ہے بلکہ ورکرز بھی گھنٹوں فارغ رہتے ہیں۔ انہوں نے خدشہ ظاہر کیا کہ اگر صنعتوں کیلئے لوڈشیڈنگ کا دورانیہ کم سے کم نہ کیا گیا تو انڈسٹری کیلئے آرڈرز پورے کرنا مشکل ہو جائے گا اور سینکڑوں ورکرز بھی بیروزگار ہو جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ آئیسکو تاجر برادری کی مشاورت سے لوڈمینجمنٹ کے اوقات کار طے کرے تا کہ توانائی بحران کا کوئی متفقہ حل نکالا جا سکے اور صنعتوں کو بھی مزید نقصان سے بچایا جا سکے۔انہوں نے صنعتوں کیلئے لوڈشیڈنگ کا دورانیہ کم کرنے کی یقین دہانی کرانے پر چیف ایگزیکٹو آئیسکو کا شکریہ ادا کیا اور امید ظاہر کی ہے وہ آئندہ بھی تاجر بردری کی مشاورت سے ان مسائل کو حل کرنے کی کوشش کریں گے تا کہ کاروباری سرگرمیوں کو ممکنہ حد تک نقصانات سے بچایا جا سکے۔ چیمبر کے صابق صدر خالد جاوید نے کہا کہ بجلی سٹیل کی صنعت کیلئے ایک اہم خال مال کا درجہ رکھتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سٹیل فرنیس گرم ہونے میں تقریبا ایک گھنٹہ لیتے ہیں اور چار گھنٹے بجلی بند رکھنے سے سٹیل کی صنعت کو چلانا ممکن نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئیسکو صنعتوں کیلئے یا تو رات کے اوقات میں لوڈشیڈنگ کرے یا پھر لوڈشیڈنگ کے دورانیے کو ممکن حد تک کم سے کم رکھے۔ آئی سی سی آئی کے سابق صدر طارق صادق نے کہا کہ صنعتکار توانائی بحران کو حل کرنے میں حکومت کے ساتھ تعاون کیلئے تیار ہیں تاہم وہ لگاتار طویل لوڈشیڈنگ کے متحمل نہیں ہو سکتے کیونکہ4گھنٹے مسلسل لوڈشیڈنگ سے انڈسٹری نہیں چل سکتی۔ انہوں نے کہا کہ صنعتوں کیلئے 2, 2گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کی جائے تا کہ صنعتی سرگرمیاں جاری رکھی جا سکیں۔

مزید : کامرس