آج چار اپریل ہے

آج چار اپریل ہے
آج چار اپریل ہے

ہیلو ، میرے پارے پارے دوستو سنائیں کیسے ہیں۔امید ہے کہ اچھے ہی ہوں گے ،جی ہاں دوستو آپ کو پتہ ہے نہ کہ آج چار اپریل ہے ، جی ہاں چار اپریل۔آپ جانتے ہے کہ چار اپریل کو پیپلز پارٹی کی تاریخ میں سیاہ حروف سے لکھا جاتا ہے، جی ہاں چار اپریل کے دن پیپلز پارٹی کے بانی و سابق وزیر اعظم ذوالفقار علی بھٹو کو تختہ دار تک پہنچایا گیا تھا،جی ہاں اسی لئے جب بھی چار اپریل کی تاریخ قریب آتی ہے تو بھٹو کے جیالے اداس ہو جاتے ہیں ،، جی ہاں ذوالفقار علی بھٹو کی برسی چار اپریل کو گڑھی خدا بخش پہنچنا شروع ہ جاتے ہیں جو پیپلز پارٹی کے قائد ذوالفقار بھٹو کی آخری آرام گاہ ہے جہاں جیالے زور و شور سے اور انتہائی عقیدت و احترام سے لاکھوں کی تعداد میں جمع ہو کر ہر سال قرآن خوانی و خصوصی دعائیہ تقریب میں بھی شرکت کر کے اپنے مرحوم قائد کی روح کو ایصال ثواب پہنچاتے ہے ۔

بھٹو کے جیالے ایک دفعہ پھر غم سے نڈھال ہیں سوگ میں گم ہیں اور لبوں پر اپنے قائد کے لئے خصوصی دعائے خیر بھی جاری ہے ،تاہم ذوالفقار علی بھٹو کی برسی کے موقع پر ایک دفعہ پھرگڑھی خدا بخش میں بھٹو کے جیالے جمع تو ہو رہے ہیں لیکن انھیں گلہ ہے اپنے قائد بھٹو کے نواسے جناب بلاول اپنے نانا کی برسی کے موقع پر پاکستان میں موجود نہیں ،تاہم بھٹو کے متوالوں کو پریشانی تو جناب بلاول اور جناب زرداری کے مابین اختلافات کی خبروں سے بھی ہے ۔بلاول نے پاکستان آنے سے انکار کردیا ۔خبر تو یہ بھی تھی کہ آصفہ باقاعدہ میدان سیاست میں چھلانگ لگا رہی ہیں ، بہر حال ایک دفعہ پھر بھٹو کی برسی کا موقع ہے اور پیپلز پارٹی سندھ میں بر سر اقتدار ہے ،لیکن تاحال مسائل کے بھنور میں روز بروز دھنستی جا رہی ہے ، اسی لئے تو پیپلزپارٹی کے جیالوں میں بھی بے چینی اور پریشانی بھی بڑھ رہی ہے ۔

جیالوں کو یہ یقین ہے ہمیشہ کی طرح جناب زرداری اپنی کمال دانش مندی سے پیپلز پارٹی کی ڈوبتی نیا کو ایک دفعہ پھر کنارے تک پہنچا دیں گے ، بہر حال دعا ہے جیالوں کی بھٹو کی برسی کے موقع پر کہ اللہ تعالی پیپلز پارٹی کے قائدین کو ذوالفقار علی بھٹو کے نقش قدم پر چلنے کی توفیق عطا فرمائے ، بہر حال اجازت چاہتے ہیں دوستو آپ سے ملتے ہیں ،جلد بریک کے بعد، اللہ نگھبان ،رب راکھا۔

مزید : کالم

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...