ہسپتالوں میں گائنی یونٹوں میں مفت علاج معالجہ کی سہولیات بند

ہسپتالوں میں گائنی یونٹوں میں مفت علاج معالجہ کی سہولیات بند

 لاہور(جاوید اقبال)صوبائی دارلحکومت کے سرکاری ہسپتالوں گائنی یونٹوں کے زچگی سنٹروں جو کہ لیبر روم کے نام سے منصوب ہیں ۔ان میں مفت علاج معالجہ کی سہولیات بند کر دی گئی ہیں ۔لیبر رومز جہاں بچوں کی پیدائش ہوتی ہے ان کو دنیا کی سب سے بڑی ایمر جنسی ڈکلئیر کیا گیا ہے۔مگر وہاں مفت علاج معالجہ بند کر دیا گیا ہے۔ہسپتالوں کی انتظامیہ نے لیبر رومز میں مفت ادویات اور سرجیکل ڈسپوزیبل کی خدمات بند کرکے زچگی کیلئے آنے والی خواتین کو پرائیویٹ مارکیٹ کے حوالے کر دیا ہے اور ہر گائنی بلاک کے ساتھ ایک پرائیوٹ فارمیسی بنا کر ٹھیکے پر دے دی گئی ہے۔جو زچگی کیلئے آنیوالی خواتین کے لواحقین کو مہنگی ادویات فراہم کر کے ان کی جیبیں کاٹ رہے ہیں ہر ہسپتال کی طرف سے ہسپتال کی حدود میں قائم کی گئی پرائیویٹ فارمیسیاں ادویات اور سرجیکل ڈسپوزیبل کی قیمتوں میں 50 سے100فیصد اوور چارجنگ کر رہی ہے تو دوسری طرف سرکاری ہسپتالوں میں قائم فارمیسیاں اور میڈیکل سٹور ادویات کی اصل ادویات کی اصل قیمت پر ڈسکاؤنٹ بھی نہیں دے رہے۔اس طریقے کے تحت ڈبل کمائی کر کے مریضوں کی جیبیں کاٹ رہے ہیں ۔بتایا گیا ہے کہ شہر کے تمام ہسپتالوں میں قائم گائنی یونٹوں کے لیبر رومز کو محکمہ صحت سمیت دنیا بھر میں سب سے بڑی ایمر جنسی ڈکلئیر کیا چا چکا ہے مگر شہر لاہو رکے تمام ہسپتالوں میں لیبر رومز یعنی زچگی سنٹروں میں مفت علاج معالجہ کی سہولیات فراہم کرنا بند کر دی گئی ہیں ۔لیبر رومز میں سرنج سمیت تمام دوائی پڑائیویٹ مارکیٹ سے منگوائی جا رہی ہے سرکاری سطح پر مفت ادویا ت نہ ملنے کا ناجائز فائدہ گائنی کے ڈاکٹر ز اٹھا رہے ہیں جو مہنگی ترین ادویات کے نسخہ جات تجویز کرتے ہیں ۔دوسری طرف لیبر رومز میں بچہ بچی کی پیدائش پر مبارکباد کے نام پر لواحقین کو لوٹا جاتا ہے مٹھائی اور مبارکباد کے نام پر ہزاروں روپے وصول کر کے بچے واپس کیے جاتے ہیں ۔غریب مریضوں کے ساتھ تیسرا بڑا ظلم گائنی بلاکوں پر قائم پرائیویٹ فارمیسی مافیا کر رہا ہے جو ادویات پر 100فیصد زائد قیمت وصول کر رہا ہے۔وائی ڈی اے کے رہنماؤں ڈاکٹر عامر بندیشہ اور ڈاکٹر حامد بٹ کا کہنا ہے کہ ہسپتالوں کی چالاک انتظامیہ غریبوں کی دشمنی پر اتر آئی ہے۔لیبر رومز کو ایمر جنسی ڈکلئیر کر دیں گے تو 24گھنٹے مفت علاج معالجہ کی سہولیات دینی ہونگی۔اس لئے مسائل پیدا کیے جا رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ لیبر رومز میں بھی 24گھنٹے علاج معالجہ کیا جائے ۔اس حوالے سے مشیر صحت خواجہ سلمان رفیق کا کہنا ہے کہ اس معاملے کا علم نہیں ہے تحقیقات کراؤں گا اور لیبر رومز میں مفت علاج معالجہ کو یقینی بنایا جائے گا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1