وزیرا علیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبد المالک بلوچ سے پاکستان میں چین کے سفیر سن وائیڈونگ کی ملاقات

وزیرا علیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبد المالک بلوچ سے پاکستان میں چین کے سفیر سن ...

اسلام آباد ، کوئٹہ( این این آئی )وزیراعلیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ سے پاکستان میں چین کے سفیر مسٹر سن وائیڈونگ ( Mr.Sun Weidong) نے جمعہ کے روز یہاں ملاقات کی۔ جس میں گوادر پورٹ کی فعالی، گوادر کاشغر راہداری، بلوچستان کے ساحلی علاقوں کی ترقی سمیت مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس موقع پر بات چیت کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا کہ گوادر پورٹ اور گوادر کی ترقی کے دیگر منصوبوں کی ملازمتوں پرپہلا حق مقامی لوگوں کا ہے مقامی لوگوں کو ترجیحی بنیادوں پر ملازمتوں کی فراہمی، خوراک کی سپلائی ٹرانسپورٹ اور دیگر چھوٹے کام مقامی ٹھیکیداروں کو دینے، علاقے کے لوگوں کو مختلف شعبوں میں فنی تربیت کی فراہمی کے ذریعہ انسانی وسائل کی ترقی اور ماہی گیری کی جدید سہولتوں کی دستیابی سے علاقے میں غربت کا خاتمہ ممکن ہوگا اور ترقیاتی عمل میں بھی تیزی آئے گی۔ وزیراعلیٰ نے چینی سفیر کو مکران کے ساحلی علاقوں میں مچھلی پکڑنے کے موجودہ فرسودہ طریقہ ء کار سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ ماہی گیری کی جدید سہولتوں کی عدم دستیبابی کے باعث مقامی لوگوں کی 70فیصد سے زائداعلیٰ معیار کی مچھلی ضائع ہوجاتی ہے۔ اور ان کو ان کی محنت کا صلہ نہیں ملتا جبکہ مچھلی کی پروسیسنگ اور پیکنگ کی سہولتیں نہ ہونے کی وجہ سے علاقے کی قیمتی مچھلی کو برآمد نہیں کیا جاسکتا اس کے ساتھ ساتھ مکران ڈویژن میں سالانہ 100سے زائد اقسام کی ہزاروں ٹن کھجور پیدا ہوتی ہے تاہم پروسینسنگ اور پیکنگ کی سہولت نہ ہونے کی وجہ سے اعلیٰ اقسام کی یہ کھجور ضائع ہوجاتی ہے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ اگر چین علاقے کے ماہی گیروں کو جدید بوٹس اور دیگر سہولتوں کے علاوہ تربت اور پنجگور میں کھجور کی پروسیسنگ اور پیکنگ کی سہولتوں کی فراہمی میں مدد کرے تو نہ صرف مقامی ماہی گیر وں اور زمینداروں کو فائدہ ہوگا بلکہ مچھلی اور کھجور کی برآمد سے ملک کو بھی کثیر زرمبادلہ حاصل ہوسکے گاانہوں نے کہا کہ جیونی، پشیکان اور بعض دیگر ساحلی علاقوں میں پیدا ہونے والے سمندری کٹاؤ سے مقامی آبادی کو مسائل کا سامنا ہے انہوں نے اس ضمن میں بھی چینی معاونت کی ضرورت پر زور دیا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ گوادر پورٹ کی فعالی سے علاقے میں صنعتی اور تجارتی سرگرمیوں کو فروغ ملے گا تاہم اس کے لئے ضروری ہے کہ علاقے کے لوگوں کو گوادر پورٹ اور صنعتی اور تجارتی سرگرمیوں میں روزگار کے حصول کے لئے مختلف شعبوں میں فنی تربیت فراہم کی جائے جس سے انسانی وسائل کی ترقی ممکن ہوسکے گی لہٰذا انہوں نے چینی سفیر سے اس حوالے سے تعاون کی فراہمی کی درخواست کی، چین کے سفیر نے کہا کہ گوادر پورٹ کی بھرپور طریقے سے فعالی اور گوادر کاشغر راہداری کی تکمیل سے علاقے اور خطے میں صنعتی اور تجارتی سرگرمیوں کو عروج ملے گااور گوادر ان سرگرمیوں کا مرکز ثابت ہوگا انہوں نے گوادر پورٹ میں مقامی لوگوں کو ترجیحی بنیادوں پر ملازمتوں کی فراہمی، ماہی گیری کی جدید سہولتوں اور انسانی وسائل کی ترقی کے لئے بھرپور تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...