ایران معاہدہ، امریکی صدر اور سعودی بادشاہ کے درمیان ٹیلی فون رابطہ

ایران معاہدہ، امریکی صدر اور سعودی بادشاہ کے درمیان ٹیلی فون رابطہ
ایران معاہدہ، امریکی صدر اور سعودی بادشاہ کے درمیان ٹیلی فون رابطہ

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

ریاض،واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک)  ایران سے ایٹمی معاہد ےکے بعد امریکی صدر اوباما نے سعودی فرمانرواہ شاہ سلمان کو ٹیلی فون کیا اور ان سےخطے کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔شاہ سلمان نے بڑے دل کا ثبوت دیتے ہوئے امید ظاہر کی کہ ایک آخری معاہدہ تشکیل پاجائے گا جسکے نتیجے میں خطے اور عالمی سلامتی کے فروغ میں مدد ملے گی۔

مزید پڑھیں: یمن اور سعودی عرب کا معاملہ ، وزیراعظم نوازشریف کی ترک ہم منصب سے ملاقات

سعودی پریس ایجنسی کے مطابق دونوں رہنماؤں نے یمن میں ہونے والی حالیہ پیش رفت پر بھی بات چیت کی جبکہ اوباما نے ایک بار پھر سعودی عرب کے دفاع کو مضبوط رکھنے میں امریکی کردار کا یقین دلایا۔  اس موقع پر اوباما نے شاہ سلمان اور خلیجی ریاستوں کی تنظیم جی سی سی کے نمائندوں کو کیمپ ڈیوڈ سمٹ میں شرکت کی دعوت دی جہاں پر ایران پر بات چیت جاری رہے گی۔  اس سے پہلے امریکی صدر نے وائٹ ہاؤس سے خطاب میں ایران کےساتھ ہونے والے فریم ورک جوہری معاہدے کو تاریخی قرار دیا اور کہا کہ اس معاہدے کے نتیجے میں کوئی آخری معاہدہ مکمل ہوجائے گا جس کے نتیجے میں امریکا، اس کے اتحادی اور دنیا بہت محفوظ ہوجائے گی۔

یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ سعودی عرب کو ایران کے ساتھ امریکی معاہدے پر تحفظات تھے لیکن شاہ سلمان نے اس بات کو نظر انداز کرتے ہوئے خطے کے امن کو اہمیت دی۔

مزید : بین الاقوامی /Headlines