یمن میں جاری لڑائی خیر اور شر کے درمیان ہے، شیعہ اور سنی کی نہیں: سعودی سفیر

یمن میں جاری لڑائی خیر اور شر کے درمیان ہے، شیعہ اور سنی کی نہیں: سعودی سفیر
یمن میں جاری لڑائی خیر اور شر کے درمیان ہے، شیعہ اور سنی کی نہیں: سعودی سفیر

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

واشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ میں موجود سعودی عرب کے سفیر عادل الجبیر نے کہا ہے کہ یمن میں جاری لڑائی خیر اور شر کے درمیان ہے، شیعہ اور سنی کی نہیں، کارروائی کا مقصد دستور کی بحالی اور استحکام ہے۔

تفصیلات کے مطابق واشنگٹن میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عادل الجبیر نے کہا ہے کہ سعودی عرب یمن میں کاروائی نہیں کرنا چاہتا تھا تاہم حوثیوں نے ایران اور حزب اللہ کی مدد سے یمن میں معاملات کو اس نہج پر پہنچایا ،ایران اور حزب اللہ کی حمایتی تنظیمیں یمن پر قبضہ کرنا چاہتی تھیں اور مجبوراً سعودی عرب کو یہ  اقدام اٹھانا پڑا۔ انہوں نے کہا کہ حوثی یمن میں دہشت گردی کر رہے ہیں جبکہ ایران اور حزب اللہ یمن میں کشیدگی کو فرقہ وارانہ رنگ دینا چاہتے ہیں۔

سعودی سفیر کا کہنا تھا کہ سعودی عرب یمن میں کارروائی نہیں کرنا چاہتا تھا تاہم دستور کی بحالی اور استحکام کیلئے ایسا کرنا پڑا۔ انہوں نے مزید کہا کہ عرب اتحادی فوجیں بھاری اسلحہ کے گودام تباہ کر رہی ہے۔

مزید : بین الاقوامی /اہم خبریں